The news is by your side.

Advertisement

بندروں کی مہلک بیماری انسانوں میں پھیلنے لگی

لندن: انگلینڈ سے تعلق رکھنے والا شہری ’منکی پوکس‘ کی مہلک بیماری میں مبتلا ہوگیا، ڈاکٹرز کے مطابق یہ بیماری بندروں سے انسانوں میں منتقل ہورہی ہے۔

برطانوی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق شہری کا ماننا ہے کہ اسے منکی پوکس ’بندر کی چیچک‘ کی بیماری افریقی ملک نائیجیریا جانے کی وجہ سے لاحق ہوئی، برطانیہ میں اس مرض کی وجہ سے اب تک چار افراد متاثر ہوچکے ہیں۔

انگلینڈ کے پبلک ہیلتھ کی جانب سے جاری اعلامیے میں بتایا گیا ہے کہ منکی پوکس کی بیماری خطرناک ہے کیونکہ دس میں سے ایک مریض زندگی کی بازی ہار جاتا ہے۔

انگلینڈ کے جنوب مغربی علاقے سے تعلق رکھنے والے شہری کی شناخت کو ظاہر نہیں کیا گیا البتہ ڈاکٹرز نے یہ تصدیق ضرور کی بندروں میں پھیلنے والی چیچک کا ایک مریض لندن کے تھامس اسپتال میں زیر علاج ہے۔

متاثرہ شخص کو انتہائی نگہداشت وارڈ میں رکھا گیا جہاں ڈاکٹرز اُس کی نگرانی کررہے ہیں۔ مریض سے صرف قریبی رشتے داروں کو ملنے کی مشروط اجازت ہے۔

پبلک ہیلتھ کے حکام کا کہنا ہے کہ متاثرہ شخص کے جسم پر پانی والے بڑے بڑے دانے نکل آئے ہیں، ہم پہلے مرحلے میں انفیکشن پر قابو پانے کی کوشش کررہے ہیں۔ ڈاکٹرز نے امید ظاہر کی ہے کہ متاثرہ شہری چند ہفتوں میں روبہ صحت ہوگا جس کے بعد اُسے گھر جانے کی اجازت دی جائے گی۔

علامات

ڈاکٹرز کے مطابق یہ بیماری بندر کے جسم میں موجود وائرس کی وجہ سے لاحق ہوتی ہے جبکہ بخار ، سر میں شدید درد ، پٹھوں میں درد ، کمر میں درد ، سوجن، سردی لگنا، بہت زیادہ تھکن کا احساس اور جلد پر دانے ابھرنا ہے۔

کیفیت

برطانوی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق ڈبلیو ایچ او کے ماہرین کا دعویٰ ہے کہ انسان اور بندر دونوں کو مرض لاحق ہونے کے بعد ایک جیسی تکلیف کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں