The news is by your side.

Advertisement

سوڈان میں مظاہرے، فوج کا عوام پر تشدد، اقوامِ متحدہ نے تحقیقات کا مطالبہ کردیا

خرطوم: سوڈان میں ہونے والے مظاہرے کے دوران فوج کی جانب سے مظاہرین پر تشدد کی اقوام متحدہ نے تحقیقات کا مطالبہ کردیا۔

تفصیلات کے مطابق سوڈان میں مظاہرین پر فوج کا تشدد کی تحقیقات کے لیے اقوام متحدہ نے عالمی کونسل بنانے کا مطالبہ کیا ہے، تاکہ ذمے داروں کو کیفر کردار تک پہنچایا جائے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق اقوام متحدہ کے ماہرین نے سوڈان میں سیکیورٹی فورسز کی جانب سے ’پر امن مظاہرین‘ پر تشدد کی تحقیقات کے لیے ہیومن رائٹس کونسل تشکیل دینے کا مطالبہ کردیا۔

اقوام متحدہ کے پانچ ماہرین نے مشترکہ پریس کانفرنس میں کہا سوڈان انسانی حقوق کے بحران سے گزر رہا ہے۔

انسانی حقوق کے ماہرین نے کہا کہ ’آزاد تحقیقات‘ کے لیے اقوام متحدہ رائٹس کونسل تشکیل دیا جائے جو 24 جون کو اپنا پہلا سیشن شروع کرے۔

واضح رہے کہ ماہرین اقوام متحدہ انسانی حقوق کے آزاد ماہرین ہیں تاہم ان کا مطالبہ اقوام متحدہ کے موقف کی ترجمانی نہیں کرتا۔

دوسری جانب سوڈان میں احتجاجی تحریک کے لیڈروں نے سول نافرمانی کی مہم ختم کرنے اور حکمراں عبوری فوجی کونسل کے ساتھ مذاکرات کی بحالی سے اتفاق کیا ہے۔

ایتھوپیا کی کوشش سے حزب اختلاف اور سوڈانی فوج کے درمیان مذاکرات کا اعلان

واضح رہے کہ سوڈان میں حکمراں فوجی کونسل کے خلاف احتجاجی تحریک کے لیڈروں کی اپیل پر منگل کو بھی عام ہڑتال تھی جبکہ خرطوم اور دوسرے شہروں میں دکانیں اور کاروباری مراکز جزوی یا مکمل طور پر بندر ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں