The news is by your side.

Advertisement

اومیکرون کے خلاف ویکسین کی افادیت، موڈرنا چیف نے خبردار کر دیا

میساچوسٹس: امریکی بائیوٹیکنالوجی کمپنی موڈرنا نے کووِڈ 19 کے نئے ویرینٹ اومیکرون کے خلاف موجود ویکسینز کی افادیت کے حوالے سے خبردار کر دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق دوا ساز کمپنی موڈرنا کے چیف اسٹفین بینسل نے یہ کہہ کر عالمی منڈی میں خطرے کی گھنٹیاں بجا دی ہیں کہ کرونا وائرس کی موجودہ ویکسینز ممکنہ طور پر اومیکرون ویرینٹ کے خلاف مؤثر نہیں ہوں گی۔

فنانشل ٹائمز کو ایک انٹرویو میں انھوں نے کہا کرونا وائرس کی موجودہ ویکسینز جتنی ڈیلٹا ویرینٹ کے لیے مؤثر تھیں اتنی وائرس کی نئی قسم کے لیے مؤثر ہونے کا امکان نہیں ہے۔

اسٹفین بینسل کا کہنا تھا کہ موجودہ کرونا ویکسینز اومیکرون کے خلاف جدوجہد تو کریں گی، تاہم ایسی ویکسین جو مکمل کارآمد ہو، اس کی تیاری میں مہینوں لگیں گے۔

کیا ویکسین تیار کرنے والی کمپنیوں نے کرونا کی نئی قسم ’اومیکرون‘ کو سمجھ لیا؟

منگل کو شائع شدہ اپنے انٹرویو میں موڈرنا چیف نے کہا کہ موجودہ ویکسین کی افادیت کے بارے میں اگلے 2 ہفتوں میں ڈیٹا دستیاب ہو جائے گا، لیکن اس حوالے سے سائنس دان پُر امید نہیں تھے۔ انھوں نے کہا میں نے جن سائنس دانوں سے اس سلسلے میں بات کی، ان سب کا کچھ ایسا کہنا تھا کہ اچھے نتائج نہیں ملیں گے۔

واضح رہے کہ بینسل کی انتباہ اس وقت سامنے آئی ہے جب جی 7 کے وزرائے صحت نے نئے ویرینٹ کے بارے میں ہنگامی بات چیت کی، جو پوری دنیا میں پھیل رہا ہے اور اقوام کو ایک بار پھر اپنی سرحدیں بند کرنے یا نئی سفری پابندیاں عائد کرنے پر آمادہ کر رہا ہے۔

آسٹرازینیکا ویکسین گروپ کے سربراہ ویکسینز کی افادیت کے حوالے سے پُرامید

بینسل کا یہ بیان عالمی منڈی میں خام تیل، ڈالر اور جاپان کی اسٹاک ایکسچینج پر اثر انداز ہوتا نظر آیا، جب کہ بیان نے اس خوف کو بھی جنم دے دیا کہ ویکسین کے غیر مؤثر ہونے سے بیماری کے پھیلاؤ اور اسپتالوں میں لوگوں کی تعداد میں اضافہ ہو سکتا ہے اور وبا کو مزید طول مل سکتا ہے۔

کرونا وائرس کی نئی قسم اومیکرون کے بارے میں عالمی ادارہ صحت کا کہنا ہے کہ اس سے انفیکشن کے بڑھنے کا ’بہت زیادہ خطرہ‘ ہے۔ جو بائیڈن کا لاک ڈاؤن نہ نافذ کرنے کا بیان مارکیٹس میں ٹھہراؤ لایا تھا، تاہم موڈرنا کے چیف کے تبصرے نے سرمایہ کاروں میں خدشات کی لہر دوڑا دی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں