The news is by your side.

Advertisement

کیا آپ وزن کم کرنے کا یہ منفرد طریقہ جانتے ہیں؟

طبی ماہرین اس بات پر اتفاق کرتے ہیں کہ موٹاپا بذات خود کئی بیماریوں کی آماجگاہ ہے، یہی وجہ ہے کہ لوگ اسے چھٹکارہ پانے کے لئے طرح طرح کے جتین کرتے ہیں۔

وزن کم کرنے کے لئے اکثر فراد ورزش اور ڈائٹنگ کا سہارا لیتے ہیں جب تک وہ ان پر عمل درآمد کرتے رہتے ہیں وزن کنٹرول میں رہتا ہے اور انہیں چھوڑنے پر دوبارہ بڑھ جاتا ہے۔

مگر اب برطانونی ماہر غذائیات نے کچھ ایسے منفرد طریقے بتادئیے جن پر عمل کرتے ہوئے وزن کو مستقل طور پر کم کیا جاسکتا ہے۔

امینڈرا ارسل نامی ماہر نے موٹاپے کے شکار افراد کو ایک منفرد طریقہ اپنانے کو کہا جس میں اپنے پیٹ اور معدے کو دھوکہ دیناہے، وہ اس طرح کے اپنے آپ سے جھوٹ بولیں کہ آپ بہت زیادہ کھا رہے ہیں، ٹیک آؤٹ پیزا کے بجائے سپر مارکیٹ کے برانڈ کا پیزا خریدیں اور اس پر بہت زیادہ ٹماٹر لگوائیں اور اپنے دماغ کو بات کے لئے قائل کریں کہ آپ کی خوراک بہت زیادہ ہے اسے کم کرنا چاہئے، یہ نفسیاتی حربہ والیم ٹرکس کہلاتا ہے۔

جبکہ امینڈا نامی ماہر غذائیات کے مطابق دوسرے طریقے میں موٹے افراد اپنے شوگر سائیکل کو کنٹرول کرنے کوشش کریں، بسکٹ اور کیک وغیرہ کوغذا میں شامل رکھنے سے خون میں چینی کی سطح بڑھنے لگتی ہے جس سے انسولین کے اخراج میں بھی اضافہ ہوجاتا ہے۔

اس طرز عمل سے خون میں چینی کی سطح تو کسی حد تک کم ہوجاتی ہے لیکن بھوک زیادہ لگنا شروع ہوجاتی ہے اس صورتحال سے بچنے کے لئے میٹھے اسنیکس کے بجائے صحت بخش غذا کا انتخاب کریں تاکہ جسم میں چینی کی سطح توازن میں رہے اور بے وقت کی بھوک سے بچیں رہیں۔

یہ بھی پڑھیں: ماہ رمضان میں ٹماٹو کیچپ کا استعمال کتنا ضروری ہے ؟

امینڈا کے مطابق وزن کم کرنے کا ایک کار آمد طریقہ یہ بھی ہے کہ ہر کھانے سے قبل پانی پینے کی عادت اپنائیں یا سوپ کا ایک پیالہ پی لیں تو یہ بھی مؤثر ثابت ہوسکتا ہے۔

مذکورہ طریقہ کار پر ایک جامع تحقیق کی گئی جس میں شامل ایسے رضاکار جو کھانے سے قبل پانی یا سوپ پیتے رہے ان کا بارہ ہفتوں میں دوسروں کی نسبت دوکلوگرام زیادہ وزن کم ہوا۔

اس کے ساتھ ہی خوراک میں تبدیلی لاکر پراسیسڈ فوڈ کی بجائے صحت بخش غذا کا انتخاب کریں، پھلوں اور سبزیوں کا استعمال بڑھا دیں،ان طریقوں کے ساتھ ہی باقائدہ ورزش کو اپنا معمول بنالیں، کیونکہ اس کے بغیر فٹ رہنے کا خواب کبھی پورا نہیں ہوسکتا اورنہ ہی ورزش کا کوئی نعم البدل ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں