The news is by your side.

Advertisement

بی جے پی کا رکن 20 سالہ خاتون کے ساتھ اجتماعی زیادتی میں ملوث

نئی دہلی: بھارت کی حکمران جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی کا ایک رکن 20 سالہ خاتون کے اغوا اور اجتماعی زیادتی کے ہولناک جرم میں ملوث پایا گیا جس کے بعد اسے پارٹی سے بے دخل کردیا گیا، پولیس بھی واقعے کی تفتیش کر رہی ہے۔

بھارتی میڈیا کے مطابق ریاست مدھیہ پردیش میں بھارتیہ جنتا پارٹی کے ایک مقامی کارکن کی جانب سے 20 سالہ دوشیزہ کو اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنانے کا واقعہ سامنے آیا تھا جس کے بعد مذکورہ کارکن کو پارٹی سے بے دخل کردیا گیا۔

پارٹی کے ضلعی صدر کمل پرتاپ سنگھ نے ایک پریس ریلیز جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ اجتماعی عصمت دری کے معاملے میں وجے ترپاٹھی کا نام آنے کے بعد پارٹی سے ان کی بنیادی رکنیت ختم کردی گئی ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ متاثرہ خاتون نے وجے ترپاٹھی سمیت مقامی طور پر نمایاں 3 مزید افراد کے نام لیے تھے جس کے بعد پولیس نے تفتیش شروع کردی تھی۔

خاتون نے بتایا کہ مذکورہ 4 افراد نے اسے گھر کے سامنے سے اغوا کیا، بعد ازاں وہ اسے ایک فارم ہاؤس پر لے گئے اور منشیات دینے کے بعد زیادتی کا نشانہ بنایا۔

بعد ازاں وہ اسے بے ہوش حالت میں اس کے گھر کے سامنے چھوڑ گئے۔

دوسری جانب پارٹی کے ضلعی صدر کمل پرتاپ کا کہنا ہے کہ اس طرح کے گھناؤنے جرم میں ملوث افراد اور ایسے کارکنوں کے لیے بی جے پی میں کوئی جگہ نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ بی جے پی اس طرح کے سلوک اور جرم کی شدید مذمت کرتی ہے، پارٹی نے تادیبی کارروائی کرتے ہوئے ان کی بنیادی رکنیت ختم کردی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں