The news is by your side.

Advertisement

انفیکشن سے متاثرہ خاتون کی آدھی کھوپڑی کاٹ دی گئی

امریکا میں ایک مارشل آرٹس انسٹرکٹر کے دماغ کے اطراف میں سائنس کا انفیکشن پھیل جانے کی وجہ سے ان کی آدھی کھوپڑی کاٹ دی گئی۔

امریکی ریاست کیلی فورنیا کے شہر سان فرانسسکو کی نتاشہ گنتھر کے لیے 5.5 انچ کی ہڈی ہٹانے کے لیے سرجری کی گئی تاکہ دماغ کو دبانے والے ماس کو روکا جاسکے۔

انہوں نے بتایا کہ ڈاکٹروں کا کہنا تھا کہ اگر سرجری نہیں کی گئی تو ایک ہفتے میں ان کی موت واقع ہو سکتی ہے۔

25 سالہ متاثرہ خاتون نے لوگوں سے درخواست کی ہے کہ سردی کی علامات کو معمولی انفیکشن سمجھ کر نظر انداز نہ کریں اور اگر طبیعت ٹھیک نہ ہو تو اسپیشلسٹ کی خدمات حاصل کریں۔

نتاشہ گنتھر کی زندگی تبدیل کردینے والی یہ آزمائش سنہ 2021 کے اواخر میں شروع ہوئی جب انہوں نے بہتی ناک اور بند سائنس کو عام سا انفیکشن سمجھ کر نظر انداز کیا۔

جوڈو بلیک بیلٹ، جو بچوں کو مارشل آرٹس سکھاتی تھیں، عموماً بیمار ہی رہتی تھیں، انہیں تشویش تب لاحق ہوئی جب ان کی حالت ڈاکٹر کی جانب سے دی جانے والی اینٹی بائیوٹکس کے بعد بھی بہتر نہیں ہوئی۔

دسمبر تک نتاشہ کو قے اور مائیگرین کی شکایت ہوئی، جس کے بعد ان کے گھر والوں نے ان پر دماغ کا اسکین کروانے کے لیے دباؤ ڈالا۔

اسکین میں معلوم ہوا کہ ان کی کھوپڑی کے اندر ماس موجود ہے جس کی وجہ سے ڈاکٹر کھوپڑی کی ہڈی کاٹنے پر مجبور ہوئے تاکہ دماغ پر موجود دباؤ کو آسان کیا جاسکے۔

سرجری کے بعد سے نتاشہ کو دماغ کی حفاظت کے لیے ہیلمٹ پہننا پڑتا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں