The news is by your side.

Advertisement

افغان حکومت نے بین الافغان مذاکرات کیلئے ٹیم تشکیل دے دی

کابل : افغان حکومت نے بین الافغان مذاکرات کیلئے ٹیم تشکیل دے دی ، مذاکراتی ٹیم میں2 خواتین پارلیمنٹرینزبھی شامل ہیں ، امریکی نمائندہ خصوصی زلمے خلیل زاد مزید اراکین کا چناؤ بھی کر سکتے ہیں۔

کابل : افغان حکومت نے بین الافغان مذاکرات کیلئے ٹیم تشکیل دے دی اور افغان صدر اشرف غنی کی ہدایت پر افغان پارلیمنٹ سے 5نام شامل کرلیے ، مذاکراتی ٹیم میں2 خواتین پارلیمنٹرینزبھی شامل ہیں۔

،ذرائع کا کہنا ہے کہ حکومتی مذاکراتی ٹیم میں عبدالرؤف ابراہیمی، قاضی نذیر احمد حنفی ، غلام فاروق نظری،فریدہ حمیدی ،فاطمہ عزیز شامل ہیں جبکہ امریکی نمائندہ خصوصی زلمے خلیل زاد مزید اراکین کا چناؤ بھی کر سکتے ہیں۔

یاد رہے افغانستان کے صدر اشرف غنی نے افغان امن معاہدے کے تحت 1500طالبان قیدیوں کی رہائی کی منظوری دی تھی، طالبان  اپنے ڈیڑھ ہزار قیدیوں کے تبادلے میں ایک ہزارسرکاری فوجی حکومت کےحوالے کریں گے۔

مزید پڑھیں : افغان صدر نے طالبان قیدیوں کی رہائی کے حکمنامے پر دستخط کردئیے

افغان صدر کی منظوری کے مطابق روزانہ سو طالبان قیدی جیلوں سے چھوڑے جائیں گے اور  قیدیوں کی رہائی کا آغاز چودہ مارچ کو پروان جیل سے ہوگا۔

بعد ازاں افغان طالبان نے افغان صدر کی 1500 قیدیوں کی رہائی کی تجویز مسترد کرتے ہوئے کہا تھا  کہ امن مذاکرات سے پہلے 5000اسیروں کی رہائی چاہتے ہیں جس کے بعد ہی بات چیت کا آغاز ہوگا۔

انہوں نے خبردار بھی کیا کہ امریکا اور طالبان کے درمیان ہونے والی بات چیت میں جن امور پر اتفاق ہوا اگر ان کی خلاف ورزی ہوئی تو ڈیل ختم ہوسکتی ہے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں