The news is by your side.

Advertisement

برازیل میں کویڈ-19 کے علاج کے لیے دوا کی منظوری

ساؤپولو: برازیل کی حکومت نے کویڈ-19 کے علاج کے لیے ہائڈرو کیسکلوروکائن دوا کی منظوری دے دی۔

تفصیلات کے مطابق برازیل کے صدر کی جانب سے دباؤ کے بعد ایک اور وزیر صحت نے استعفیٰ دے دیا جس کے بعد وزارت صحت نے کرونا وائرس کے علاج کے لیے ہائڈرو کیسکلوروکائن دوا کی منظوری کے حوالے سے نئی ہدایات جاری کر دیں۔

برازیلین صدر جیئر بولسونارو کا منگل کے روز کہنا تھا کہ کرونا کے حوالے سے عبوری وزیر صحت ایڈورڈو پازیلو نئے پروٹوکول پر دستخط کریں گے۔

خیال رہے کہ کویڈ-19 کے لیے فی الحال عالمی سطح پر کوئی منظور شدہ علاج یا ویکسین موجود نہیں ہے، لیکن کئی دہائیوں پرانی ہائڈرو کیسکلوروکائن کو بڑے پیمانے پر استعمال کیا گیا ہے۔

  حال ہی میں ہوئی ایک تحقیق کے اعداد و شمار سے پتہ چلا ہے کہ معیاری دیکھ بھال کے ساتھ ہائڈرو کیسکلوروکائن دیے گئے 97 مریضوں میں سے 28 فیصد مریض مرگئے جبکہ اس کے مقابلے میں 158 مریضوں کے 11 فیصد وہ تھے جنہیں یہ دوا نہیں دی گئی۔

ہائڈرو کیسکلورو کائن اور اینیٹی بائیوٹک ایزیتھو مائسن دیے گئے 113 مریضوں کی اموات کی شرح 22 فیصد تھی۔

ہائڈرو کیسکلوروکائن ملیریا کے علاج کے لیے استعمال کی جاتی ہے کچھ ممالک انہیں کرونا وائرس کے مرض کے علاج کے لیے استعمال کر رہے ہیں۔ یہ کلوروکین کی طرح ہے اور ملیریا کی متعدد اقسام کے ساتھ ساتھ لیوپس ایریٹومیٹوس کے علاج میں بھی مفید ہے۔

ٹرمپ کورونا وائرس کے خوف سے کون سی دوا لے رہے ہیں؟

دوسری جانب امریکی صدر ڈاکٹروں کی جانب سے واضح ہدایات کے باوجود روزانہ ملیریا کی دوا لے رہے ہیں جبکہ ان کے اندر کرونا کی علامات نہیں ہیں۔

ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا ہے کہ وہ ہر روز کوویڈ 19سے نجات پانے کے لئے ہائیڈروکسی کلورو کوائن لے رہے ہیں۔امریکی صدر نے بتایا کہ میں گزشتہ دو ہفتوں سے یہ دوا روزانہ کھا رہا ہوں۔

یاد رہے امریکی ماہرین اور ڈاکٹرز کے مطابق بھی یہ دوا کرونا وائرس کے مریضوں پر کام نہیں کرتی اور اس کا استعمال محفوظ نہیں ہے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں