The news is by your side.

Advertisement

کینسر سے بچانے والی دوا کینسر میں اضافے کی وجہ

ایک طویل عرصے سے ماہرین اس بات پر متفق ہیں کہ اسپرین کی روزانہ معمولی مقدار بڑی آنت کے کینسر سمیت متعدد اقسام کے کینسر کے خطرے کو کم کرسکتی ہے۔

لیکن حال ہی میں اسی سے متعلق ہونے والی ایک تحقیق نے ماہرین کو اچھنبے میں ڈال دیا۔

جرنل آف دا رائل سوسائٹی انٹر فیس میں شائع ہونے والی تحقیق کے مطابق گو کہ اسپرین کا کینسر سے تحفظ کا یہ فائدہ تو اپنی جگہ مسلم ہے، تاہم پھر بھی اگر کوئی شخص کینسر کا شکار ہوجائے تو یہی اسپرین کینسر کے علاج کے خلاف سخت مزاحمت کرتی ہے۔

ماہرین کے مطابق 5 سال تک روزانہ اسپرین کی معمولی سی مقدار آئندہ زندگی میں بہت سی اقسام کے کینسر سے تحفظ دے سکتی ہے۔ اسپرین کے باقاعدہ استعمال سے پروسٹیٹ کینسر، گلے، پھیپڑوں اور بڑی آنت کے کینسر کا خطرہ نصف حد تک کم ہوجاتا ہے۔

تاہم مذکورہ تحقیق سے معلوم ہوا کہ اسپرین دراصل خلیوں کے ٹوٹنے کے عمل کو کم کردیتی ہے جس کی وجہ سے خلیے مردہ ہونے لگتے ہیں۔

مزید پڑھیں: اسپرین کے حیرت انگیز استعمالات

ماہرین نے اس کی تصدیق نہیں کی کہ آیا یہی وہ وجہ ہے جو آگے چل کر کینسر کے خلاف موزوں ترین ماحول پیدا کرتی ہے اور کینسر باآسانی کسی شخص کو اپنا شکار بنا کر اسے موت کے منہ میں لے جاتا ہے۔

تحقیق میں شامل ماہرین کا کہنا تھا کہ ہوسکتا ہے اسپرین میں کوئی ایسا جز موجود ہو جو جسم میں جا کر کینسر کو تقویت دینے یا اسے پیدا کرنے کا سبب بھی بن سکتا ہو، ایسی صورت میں ہمیں بڑے پیمانے پر مزید جامع تحقیق کرنی ہوگی۔


انتباہ: یہ مضمون قارئین کی معلومات میں اضافے کے لیے شائع کیا گیا ہے۔ مضمون میں دی گئی کسی بھی تجویز پر عمل کرنے سے قبل اپنے معالج سے مشورہ اور ہدایت ضرور حاصل کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں