روس : کریمیا کالج حملہ، دوشیزہ دوران علاج دم توڑ گئی crimea-attack
The news is by your side.

Advertisement

روس : کریمیا کالج حملہ، دوشیزہ دوران علاج دم توڑ گئی

فائرنگ کے واقعے میں ہلاک ہونے والوں کی تعداد 20 ہوگئی

ماسکو: روس سے ملحق ریاست کریمیا کے کالج میں طالب علم کی اندھا دھند فائرنگ اور دھماکے کے نتیجے میں حملہ آور سمیت 20 افراد ہلاک جبکہ 74 زخمی ہوگئے۔

تفصیلات کے مطابق مطابق روس سے الحاق شدہ سابق یوکرینی ریاست کریمیا کے پولی ٹیکنیک کالج میں ایک طالب علم نے کیفے ٹیریا میں پہلے دھماکا خیز مواد پھینکا اور پھر کالج کی عمارت میں فائرنگ شروع کردی جس کے نتیجے میں اب تک 20 افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ کچھ دیر قبل زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے ہلاک ہونے والی لڑکی کو ہیلی کاپٹر ایمبولینس میں اسپتال لے جار ہے تھے لیکن وہ ہیلی کاپٹر میں ہی دم توڑ گئی۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ کریمیا کے پولی ٹیکینک کالج میں پیش آنے والے فائرنگ کے افسوس ناک واقعے میں 15 طالب علموں اور 5 اساتذہ سمیت 20 افراد ہلاک ہوئے ہیں۔

روسی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ خودکار رائفل سے فائرنگ اور بم دھماکے کے نتیجے میں کچھ زخمیوں کے اعضاء جسم سے جدا ہوچکے ہیں، حادثے میں زخمی ہونے والے افراد میں 10 کی حالت تشویس ناک ہے جنہیں انتہائی نگہداشت کے وارڈ میں رکھا ہوا ہے۔

حملے کے نتیجے میں 74 سے زائد افراد زخمی ہوئے ہیں جنہیں اسپتال میں طبی امداد فراہم کی جارہی ہے۔

روسی تفتیش کاروں کا کہنا ہے کہ ایک 18 سالہ طالب علم واقعے کا ذمہ دار تھا جس نے بعدازاں اپنی جان بھی لے لی، طالب علم کی شناخت ولادیسلاف روسلیا کے نام سے ہوئی ہے۔

خیال رہے کہ جزیزہ نما کریمیا کا سنہ 2014 میں روس سے الحاق ہوا ہے جبکہ اس سے قبل کریمیا یوکرائنی حکومت کے زیر انتظام تھا۔

حملے کے بعد مقامی حکام نے جزیرہ نما کریمیا میں ایمرجنسی نافذ کرتے ہوئے 19 کلو میٹر طویل پل پر بھی سیکیورٹی تعینات کردی جو روس کو کریمیا سے ملاتا ہے جسے رواں برس ہی آمدورفت کے لیے کھولا گیا تھا۔

روسی صدر کے ترجمان کے مطابق اس حملے کی تحقیقات جاری ہیں، پیوٹن نے تفتیش کاروں کو واقعے کی تحقیقات کرنے اور ہلاک شدگان کے لواحقین سے اظہار تعزیت کی ہدایات جاری کی ہیں۔

ایک طالبہ کا کہنا ہے کہ وہ حملے سے کچھ دیر قبل ہی گراؤنڈ سے گئیں تھیں، ان کا کہنا تھا کہ متاثرین میں طلباء اور اساتذہ شامل ہیں۔

روسی میڈیا کے مطابق حملہ آور طالب علم کے دوست کا کہنا ہے کہ وہ ٹیکنیکل کالج سے سخت نفرت کرتا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں