The news is by your side.

Advertisement

کرونا وائرس، ٹرمپ کے عزائم سامنے آگئے

ٹرمپ کرونا پر سیاست کر کے دوبارہ صدر بننے کے خواہش مند

واشنگٹن: امریکی صدر نے ایک بار پھر کرونا وائرس کو بنیاد بنا کر سیاست شروع کردی اور عوام کو یقین دہانی کرائی کہ وہ  آئندہ انتخابات میں فتح حاصل کرنے کے بعد وائرس پھیلانے والے ملک سے نمٹیں گے۔

امریکی میڈیا رپورٹ کے مطابق ہفتے کے روز اوکلاہوما کے علاقے ٹوسالا  اپنی پہلی الیکشن ریلی سے خطاب کرتے ہوئے ٹرمپ نے ایک بار پھر وائرس پھیلانے کا ذمہ دار چین کو قرار دیا۔

اپنے حامیوں سے خطاب کرتے ہوئے ٹرمپ کا کہنا تھا کہ چین کی وجہ سے دنیا بھر میں ساڑھے چار لاکھ سے زائد لوگ مارے گئے جبکہ 85 لاکھ سے زائد متاثر بھی ہوئے ہیں۔

مزید پڑھیں: ٹرمپ نے انتخاب میں کامیابی کیلئے چین سے مدد مانگی، سابق مشیر نے بھانڈا پھوڑ دیا

انہوں نے کہا کہ چین کے شہر ووہان میں گزشتہ برس دسمبر سے یہ وائرس پھیلنا شروع ہوا مگر چینی حکام نے اس بات کو چھپایا جس کی وجہ سے آج دنیا کو خمیازہ بھگتنا پڑ رہا ہے۔

ریلی سے خطاب کرتے ہوئے ٹرمپ نے کہا کہ کوویڈ 19 ایک بیماری ضروری ہے مگر ہسٹری سے زیادہ  اس کے نام ہیں، میں اب اسے ’کنگ فلو‘ کا نام دے رہا ہوں‘۔

اُن کا کہنا تھا کہ ’میں اسے مزید 19 قسم کے نام بھی دے سکتا ہوں، بہت سارے لوگ اسے وائرس قرار دے رہے ہیں جبکہ متعدد لوگ اسے صرف نزلہ اور زکام قرار دیتے ہیں، میرے خیال سے ہمارے پاس  اس کے19 اور 20 قسم کے نام موجود ہیں‘۔

اس سے قبل وائٹ ہاؤس انتظامیہ اور امریکی صدر نے کرونا کو ’ووہان وائرس‘ کا نام دیا اور وجہ بیان کی تھی کہ یہ جس شہر سے اٹھا اسے وہیں کے نام کی شناخت ملنی چاہیے۔

یہ بھی پڑھیں: چین نے کرونا وائرس کے علاج میں ایک اور اہم سنگ میل طے کر لیا

یاد رہے کہ امریکا میں اب تک کرونا سے 23 لاکھ سے زائد افراد متاثر ہوئے جبکہ اموات کی تعداد 1 لاکھ 19 ہزار سے تجاوز کر گئی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں