The news is by your side.

Advertisement

پارٹی میں جانے کی جلدی، ماں نے بچی کو موت کے منہ میں دھکیل دیا

ماسکو: روس میں 21 سالہ ماں کی پارٹی میں جانے کی جلدی نے 3 سالہ کمسن بچی کو موت کی وادی میں دھکیل دیا۔

غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق روس کے شہر کیرو میں 21 سالہ ماریا پلین کینا اپنی تین سالہ کمسن بچی کرسٹینا کو سالگرہ کے دن گھر پر بھوکا چھوڑ کر پارٹی میں چلی گئی جس کے سبب بچی ہلاک ہوگئی۔

تین سالہ کرسٹینا کی 47 سالہ دادی ایرینا پلین کینا جب اپنی پوتی کی سالگرہ منانے تحفہ لے کر گھر پہنچیں تو اسے مردہ حالت میں پاکر حیران رہ گئیں، انہیں میں گھر پر والدہ کو دیکھا تو وہ موجود نہیں تھیں۔

ایرینا نے فوری طور پر ایمبولینس اور پولیس کو اطلاع دی، بچی کو اسپتال منتقل کیا گیا جہاں ڈاکٹرز نے اس کی موت کی تصدیق کردی۔

کمسن بچی کی دادی کا کہنا تھا کہ ماریا سے ان کی روزانہ بات ہوتی تھی اور ماریا کہتی تھی کہ کرسٹینا بالکل ٹھیک ہے۔ بچی کی دادی ایرینا کا کہنا ہے کہ اگر مجھے پتا ہوتا کہ میری بیٹی سے کمسن بچی نہیں سنبھالی جارہی تو اس کی پرورش کی ذمہ داری میں لے لیتی۔

پولیس کے مطابق ماں نے غفلت کا مظاہرہ کرتے ہوئے اپنی بچی کو گھر میں اکیلا چھوڑ کر دروازہ بند کرگئی اور بچی بھوکی پیاسی رہنے کے بعد ہلاک ہوگئی۔

ماریا پلین کینا نے اعتراف کیا کہ ’وہ جان بوجھ کر دروازہ بند کرکے پارٹی میں چلی گئی تھی‘، عدالت نے ماریا کو 2 ماہ کے لیے جیل بھیج دیا جبکہ مزید تفتیش جاری ہے۔

ظالم ماں کی پڑوسی خاتون کا کہنا تھا کہ ’کوئی ماں اتنی لاپرواہ کیسے ہوسکتی ہے۔‘

رپورٹ کے مطابق ظالم ماں کے چہرے پر بچی کی ہلاکت پر ذرا بھی افسردگی نہیں ہے نہ ہی اس نے آنسو بہائے، امید ہے کہ ماریا پر بچی کو قتل کرنے کی دفعات کے تحت سزا دی جائے گی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں