جھیل سے قدیم تلوار دریافت کرنے والی بچی ملکہ سوئیڈن کا لقب مل گیا 1,500-year-old sword
The news is by your side.

Advertisement

جھیل سے قدیم تلوار دریافت،8 سالہ بچی کو ملکہ سوئیڈن کا خطاب مل گیا

اسٹاک ہوم : سوئیڈن کی جھیل سے پندرہ سو سال پرانی نایاب تلوار دریافت کرنے پر 8 سالہ بچی کو سوشل میڈیا صارفین نے راتوں رات سوئیڈن کی ملکہ بنا دیا۔

تفصیلات کے مطابق یورپی ممالک سمیت کئی دنیا بھر کے بیشتر ممالک میں قدیم بادشاہی نظام موجود ہے لیکن اگر جھیل کنارے پکنک مناتے ہوئے ملکہ کا خطاب مل جائے تو یہ کوئی معمولی بات نہیں ایسا ہی کچھ یورپی ملک سوئیڈن میں ہوا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ سوئیڈن کی رہائشی 8 سالہ بچی ساگا وینیک اپنے والدین کے ہمراہ ’وڈو اسٹرن‘ نامی جھیل پر چھٹی منا رہی تھی کہ اچانک جھیل میں تیراکی کرتے ہوئے بچی کو ایک عجیب و غریب تلوار ملی جو انتہائی قدیم لگ معلوم ہورہی تھی۔

مقامی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ ساگا وینیک کے والدین قدیم اور قیمتی تلوار کو لے شہر کے عجائب گھر گئے تاکہ اس سے متعلق معلومات حاصل کی جائے سکیں اور عجائب گھر کے تحقیق کاروں کی بات سن کر حیران رہ گئے۔

محکمہ آثار قدیمہ کے تحقیق کاروں نے دعویٰ کیا تھا کہ مذکورہ تلوار پندرہ سو برس قدیم ہے، ان کا کہنا تھا کہ تلوار کے مالک نے بہت طریقے سے تلوار کو جھیل برد کیا تھا جس کے باعث وہ اب تک اصلی حالت میں موجود ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ محکمہ آثار قدیمہ کی انتظامیہ نے جھیل سے تلوار ملنے کے بعد تحقیق کاروں کی ٹیم کو جھیل اور اردگرد کے علاقے میں نایاب اور تاریخی چیزوں کی تلاش کےلیے لگا دیا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ جھیل سے 15 سو برس قدیم تلوار دریافت ہونے پر سوشل میڈیا صارفین نے 8 سالہ بچی کو سوئیڈن کی ملکہ کا لقب دے دیا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں