The news is by your side.

Advertisement

ہائیڈروجن بم کیا ہے؟

شمالی کوریا کی جانب سے ہائیڈروجن بم کے تجربے نے بڑی طاقتوں کو لرزا کر رکھ دیا ہے، ہائیڈروجن بم لمحوں میں شہر کے شہر لمحوں میں صفحہ ہستی سے مٹانے کی صلاحیت رکھتا ہے۔

ہائیڈروجن بم جسے تھرمو نیوکلیئر بم، فیوژن بم یا ’ایچ بم‘ بھی کہا جاتا ہے، ہائیڈروجن بم کے پہلے مرحلے میں اس کے اندر موجود ایٹم بم چلایا جاتا ہے۔ جس سے بہت ذیادہ گرمی اور دباؤ پیدا ہوتا ہے۔

ہائیڈروجن بم میں فیوژن کی مدد سے دھماکہ کیا جاتا ہے جو کہ روایتی ایٹم بم کے مقابلے میں کہیں زیادہ طاقتور ہوتا ہے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ ہائیڈروجن بم ایسے مہلک اور خوفناک ہتھیار ہیں، جو لمحوں میں شہروں کے شہر صفحہ ہستی سے مٹا سکتے ہیں، تابکار ذرات دس سے بیس ہزار مربع میل کے علاقے کی فضا کو زہریلا کر دیتے ہیں، جس سے کروڑوں افراد متاثر ہوسکتے ہیں۔

شمالی کوریا باضابطہ طور پر ہائیڈروجن بم رکھنے والا دنیا کا چھٹا ملک بن گیا ہے، ہائیڈروجن بم کا سب سے پہلا تجربہ امریکا نے یکم نومبر 1952 کو کیا تھا جب کہ روس، برطانیہ، فرانس اور چین کے پاس بھی ہائیڈروجن بم موجود ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں