The news is by your side.

Advertisement

بھارتی وزیر دفاع نے سرجیکل اسٹرائیک کے ثبوت مانگنے پر کارروائی کو نیا نام دے دیا

نئی دہلی: بھارتی وزیردفاع منور پاریکر نے کہا ہے کہ سرجیکل اسٹرائیک 100 فیصد درست تھی تاہم ہمیں اس کے ثبوت دینے کی کوئی ضرورت نہیں ہے۔

تفصیلات کے مطابق مودی سرکار اور بھارتی فوج کی جانب سے کیا گیا دعویٰ خود ان کے گلے کا پھندا بن گیا ہر روز نئی تاویلیں پیش کرنے والے بھارتی حکام اپنے دعویٰ کے دفاع میں مسلسل ناکام نظر آرہے ہیں۔

بھارتی وزیر داخلہ منور پاریکر سے صحافی نے سرجیکل اسٹرائیک کے ثبوت پیش کرنے کے حوالے سے سوال کیا تو انہوں نے سرجیکل اسٹرائیک سے جان چھڑانے کی کوشش کرتے ہوئےکہا کہ ’’بھارتی فوج نے کنٹرول لائن پر کاؤنٹر ٹیررازم ایکشن کیا ہے ‘‘۔ صحافی کی جانب سے مسلسل استفسار کرنے پر بھارتی وزیر نے مودی سرکار کی پالیسی کو اپناتے ہوئے بات گول مول کرتے ہوئے کہا کہ ‘‘ہمیں اس کے ثبوت دینے کی کوئی ضرورت نہیں ہے‘‘۔

دوسری جانب سرجیکل اسٹرائیک کا دعویٰ کرنے اور ثبوت نہ پیش کرنے کے حوالے سے مودی سرکار کو بھارتی سیاستدانوں کی جانب سے بھی سخت تنقید کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے، نئی دہلی کے وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال اور کانگریس کے رہنما نے کہا کہ ’’مودی سرکار اپنا پول کھل جانے کے خوف سے کوئی ثبوت پیش نہیں کرپارہی‘‘۔

قبل ازیں بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی نے بے جے پی کے رہنماؤں اور وزیروں کو سرجیکل اسٹرائیک پر کسی بھی قسم کے تبصروں سے گریز کرنے کی ہدایات جاری کیں تھی۔

 

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں