The news is by your side.

منی لانڈرنگ کیس میں جیکلین فرنانڈز سے 8 گھنٹے تفتیش

دہلی پولیس کے اقتصادی جرائم ونگ نے بالی وڈ اداکارہ جیکلین فرنانڈز سے 200 کروڑ روپے کی منی لانڈرنگ کیس میں 8 گھنٹے سے زائد تفتیش کی۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق جیکلین فرنانڈز صبح 11 بج کر 30 منٹ پر تحقتقاتی ونگ کے دفتر پہنچیں اور انہیں رات 8 بجے باہر آتے دیکھا گیا۔

اس سے قبل سرکاری تحقیقاتی ایجنسی انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ (ای ڈی) نے اداکارہ کے خلاف چارج شیٹ پیش کی تھی جس میں تہلکہ خیر انکشافات ہوئی تھے۔

مزید پڑھیں: بھتہ خوری اور منی لانڈرنگ کیس میں نورا فتیحی سے 7 گھنٹے پوچھ گچھ

چارج شیٹ کے مطابق: ’جیکلین نے بتایا کہ وہ سکیش چندرا کو نہیں جانتیں، دراصل انہوں نے غلط بیانی کی۔ وہ ملزم کے جرائم سے واقف ہونے کے باوجود نہ صرف اس کی دوست رہیں بلکہ مہنگے تحائف بھی وصول کیے۔ انہوں نے جان بوجھ کر ملزم کے جرائم پر پردہ ڈالا اور مالی فوائد حاصل کیے۔ جیکلین کے ہیئر اسٹائلسٹ شان نے 2021 میں انہیں ملزم کے بارے میں سب کچھ بتایا مگر انہوں نے سب نظر انداز کر دیا‘۔

اس میں مزید کہا گیا تھا: ’جیکلین اعتراف کر چکی ہیں کہ انہوں نے ملزم سے پانچ مہنگی گھڑیاں، زیوارت، 65 جوتے، 47 سوٹ، 32 بیگ، 9 پینٹنگ اور برتنوں کا ایک سیٹ حاصل کیا۔ مجرم نے 2021 میں اداکارہ کے والدین کو 2 کاریں بطور تحفہ دیں جس کے بارے میں جیکلین نے تفتیش کے دوران پوچھنے کے باوجود نہیں بتایا۔ جیکلین نے یہ بھی اعتراف کیا ہے کہ سکیش چندرا نے انہیں سری لنکا میں جائیداد بھی خرید کر دی‘۔

مزید پڑھیں: جیکلین کے کروڑوں کے اثاثے ضبط کرلیے گئے

تحقیقات میں یہ بات بھی سامنے آئی کہ جیکلین نے منی لانڈرنگ کی رقم مہنگے تحائف کی مدد سے یہاں سے وہاں کی، انہوں نے اپنے اسٹاف کو ملزم سے متعلق معلومات بھی ڈیلیٹ کرنے کی ہدایت کی تاکہ وہ گرفت میں نہ آسکیں۔

چارج شیٹ کے مطابق سکیش چندرا نے جیکلین کو 7 کروڑ 12 لاکھ روپے دیے جبکہ ان کی بہن کو 1 کروڑ 26 لاکھ، بھائی کو 15 لاکھ روپے اور آسٹریلیا میں 5 کروڑ 71 لاکھ کے تحائف دیے۔

واضح رہے کہ انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ ملزم سکیش چندرا شیکھر کے خلاف 200 کروڑ روپے کی منی لانڈرنگ کی تحقیقات کر رہی ہے۔ جیکلین کو ملزم کے ساتھ قریبی تعلقات کی وجہ سے کیس میں نامزد کیا گیا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں