The news is by your side.

Advertisement

حرا ذیشان نے ہر جمعہ کو دلہن بننے کی وجہ بتادی

لاہور سے تعلق رکھنے والی حرا ذیشان نے ہر جمعہ کو دلہن بننے کی وجہ بتادی۔

تفصیلات کے مطابق حرا ذیشان نے اے آر وائی ڈیجیٹل کے پروگرام ’گڈ مارننگ پاکستان‘ میں شرکت کی اور میزبان ندا یاسر کی جانب سے پوچھے گئے مختلف سوالات کے جوابات دئیے۔

حرا ذیشان نے بتایا کہ شادی کو 16 سال کا عرصہ بیت چکا ہے، بچپن سے ہی تیار ہونے اور جھومر لگانے کا شوق تھا، ننھیال اور ددھیال میں سب کو پتا ہے کسی کی بھی شادی ہو میں نے دلہن بن کر شرکت کرنی ہے۔

انہوں نے بتایا کہ میری منگنی ذیشان سے ہوچکی تھی، کچھ عرصے بعد والدہ کینسر میں مبتلا ہوگئیں وہ گنگا رام اسپتال میں زیر انتہائی نگہداشت کے وارڈ میں زیرعلاج تھیں ذیشان اسپتال میں خون کا عطیہ دینے کے لیے آئے تھے، والدہ نے ساس کو دیکھ کر کہا کہ اگر میری زندگی میں بیٹی کی رخصتی ہوجائے تو اچھا ہے۔

حرا ذیشان نے کہا کہ والدہ کے اصرار پر مجھے گھر کے کپڑوں میں ہی رخصت کردیا گیا اور میرا دلہن بننے کا شوق پورا نہ ہوسکا۔

انہوں نے جمعہ کو دلہن بننے کی وجہ بتاتے ہوئے کہا کہ لاہور میں دھماکا ہوا تھا جس کی آواز سے ان کا ذہن متاثر ہوا اور وہ ڈپریشن میں چلی گئی تھیں، والدہ کے انتقال کے بعد مرض مزید بڑھتا گیا، شوہر مجھے اسپتال لے گئے تو ڈاکٹر نے کہا کہ انہیں کوئی بھی صدمہ نہ پہنچے اور انہیں خوش رکھنے کی کوشش کریں۔

حرا نے بتایا کہ ڈاکٹر نے شوہر سے کہا کہ انہیں مصروف رکھیں اور شوہر کو معلوم تھا کہ مجھے سجنے سنورنے کا بہت شوق ہے، وہ پاکستان میں تھے تو میں ہر جمعے دلہن کی طرح تیار ہوجاتی تھی اور جب وہ بیرون ملک چلے گئے تو ایک دن گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ آج تیار نہیں ہوئیں تو وہیں سے میں نے ہر جمعہ کو دلہن کی طرح تیار ہونا شروع کردیا۔

حرا ذیشان نے بتایا کہ ان کے 4 بچے ہیں جن میں تین بیٹے اور بیٹی ہیں، دو بچوں کا انتقال ہوچکا ہے، حرا کا کہنا تھا کہ شوہر نے مجھے ڈپریشن سے نکالا، ان کی چھٹی جمعے کو ہوتی تھی تو میں جمعے کو دلہن کی طرح تیار ہوجاتی تھی اسی وجہ سے میرا نام جمعہ کی دلہن پڑ گیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں