The news is by your side.

Advertisement

صدر مملکت کے ساتھ بی آر ٹی میں سفر کے بعد جب ہم کراچی پہنچے؟

کراچی: شہر قائد کی سڑکوں کا حال ایک طرف اور دوسری طرف ٹرانسپورٹ کی بری حالت، اس شہر پر ایک عرصہ گزر گیا اور نہ اس کی سڑکوں نے ترقی کی، نہ اس پر روزانہ لاکھوں لوگوں کو منزلوں تک پہنچانے کے لیے دوڑنے والی ٹرانسپورٹ میں کچھ بہتری آئی۔

لیکن اس شہر پر قبضہ جمانے، اور اس کی ملکیت کے دعوے دار کئی ایک ہیں، اور شہر کی حالت زار دیکھتے ہوئے بھی دعوے داروں کو کبھی حیا نہ آئی، کبھی انھوں نے اپنی ‘ذمہ داری’ کو ‘اون’ نہیں کیا۔

اس صورت حال کو نمایاں کرنے کے لیے آج پاکستان تحریک انصاف کراچی کے کچھ پارلیمنٹیرینز نے ایک مختصر سی دل چسپ ویڈیو بنائی اور صحافیوں سے شیئر کی۔

پی ٹی آئی کے ایم پی ایز نے صدر مملکت عارف علوی کے ساتھ کچھ دیر قبل بی آر ٹی میں سفر کیا، اور پھر انھوں نے کراچی کی ٹرانسپورٹ کا ‘مزا’ لینے کا تجربہ کیا، ان شخصیات میں راجہ اظہر، سعید آفریدی اور راسبتان خان شامل تھے، جنھوں نے بی آر ٹی کے آرام دہ سفر کے بعد رکشے میں سفر کیا۔

ویڈیو شیئر کرتے ہوئے ایم پی اے راجہ اظہر نے بتایا کہ تھوڑی دیر پہلے ہم وی آئی پی بی آر ٹی گرین لائن میں صدر پاکستان کے ساتھ سفر کر رہے تھے، ہم نے نمائش چورنگی تا پٹیل پاڑہ اچھا سفر کیا، اور اب ٹوٹی سڑکوں پہ سفر کر رہے ہیں، ہماری کمر دکھ گئی ہے۔

ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ صوبائی اسمبلی کے اراکین اچھے موڈ کے ساتھ رکشے میں سفر کر رہے ہیں، لیکن لگنے والے جھٹکے بتاتے ہیں کہ کراچی کی سڑکوں پر رکشے میں بیٹھنا کیسا ہوتا ہے، یہی وجہ ہے کہ زیادہ تر لوگ بیمار افراد کو رکشے میں نہیں لے کر جاتے۔

راجہ اظہر نے ویڈیو میں وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ سے مطالبہ کیا کہ صاحب، کراچی کو سڑکیں اور ٹرانسپورٹ دیں، ہم نے ابھی کچھ دیر قبل جو بی آر ٹی میں سفر کیا تو دیکھا کہ وہاں لوگ وزیر اعظم کو دعائیں دے رہے ہیں، تو مراد علی شاہ صاحب آپ بھی دعائیں سمیٹ سکتے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں