خوب روکا شکایتوں سے مجھے -
The news is by your side.

Advertisement

خوب روکا شکایتوں سے مجھے

خوب روکا شکایتوں سے مجھے
تونے مارا عنایتوں سے مجھے

بات قسمت کی ہے کہ لکھتے ہیں
خط وہ کن کن کنایتوں سے مجھے

واجب القتل اُس نے ٹھہرایا
آیتوں سے، روایتوں سے مجھے

حالِ مہر و وفا کہوں تو ، کہیں
نہیں شوق ان حکایتوں سے مجھے

کہہ دو اشکوں سے کیوں ہوکرتے کمی
شوق کم ہے کفایتوں سے مجھے

لے گئی عشق کی ہدایت ذوق
اُس سرے سب نہایتوں سے مجھے​

**********

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں