The news is by your side.

Advertisement

وکیل نے 2 تاجروں کو موت کے گھاٹ اتار کر خود کشی کرلی

نئی دہلی: بھارت میں رقم کی لین دین کے چکر میں وکیل نے دو تاجروں کو موت کے گھاٹ اتار کر خود کشی کرلی۔

بھارتی میڈیا کی رپورٹ کے مطابق یہ واقعہ بھارتی ریاست اترپردیش کے شہر علی گڑھ میں پیش آیا جہاں پیسے دینے کے بہانے سے سلیم برنی نامی وکیل نے محمد اکرم اور سواپنل نامی بھارتی تاجروں کو فائرنگ کرکے قتل کردیا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ دونوں تاجروں کو ہلاک کرنے کے بعد وکیل نے خود کشی کرلی۔ وکیل دونوں تاجروں کا تقریباً 20 لاکھ روپے کا مقروض تھا ادا نہ کرنے کی صورت میں اس نے دونوں کو ہلاک کردیا اور قانونی کارروائی سے بچنے کے لیے خود کو بھی گولی مار لی۔

متعلقہ ادارے کے مطابق ہلاک وکیل نے پہلے ایک تاجر کو مقررہ مقام پر بلا کر موت کے گھاٹ اتارا بعد ازاں اس نے دوسرے تاجر کو مارنے کی پلاننگ کی اور اس کے گھر پہنچ گیا۔

بھارت: معمولی تنازع پر بھارتی شہریوں کے ہاتھوں مسلمان قتل

دوسرے تاجر کے والد نے وکیل کو گھر میں داخل کرلیا جبکہ موقع دیکھتے ہی سلیم برنی نے سواپنل پر گولیوں کی بوچھاڑ کردی اور فوراً ہی اپنے سر پر گالی مار کر ہلاک ہوگیا۔

خیال رہے کہ وکالت سے قبل ہلاک ملزم مسلم یونیورسٹی میں لیب اسسٹنٹ تھا جس کے بعد اس نے وکالت کی ڈگری حاصل کی اور پیشہ ورانہ خدمات سرانجام دینے لگا اور اسی دوران ہی وہ مذکورہ تاجروں کا مقروض بھی ہوگیا تھا۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں