The news is by your side.

Advertisement

اسٹیفنی گریشام وائٹ ہاوس کی نئی ترجمان مقرر

واشنگٹن : امریکی خاتون اول میلانیا ٹرمپ کی پریس سیکریٹری اسٹیفنی گریشام وائٹ ہاوس کی نئی ترجمان کے فرائض انجام دیں گی۔

تفصیلات کے مطابق وائٹ ہاوس کی نئی ترجمان کے نام کا اعلان امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی اہلیہ میلانیا ٹرمپ نے کیا، اسٹیفنی گریشم سنہ 2015 سے ڈونلڈ ٹرمپ کے ساتھ ہیں۔

امریکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ اسٹیفنی گریشم وائٹ ہاوس کی پریس سیکریٹری اور کمیونی کیشن ڈائریکٹر کے فرائض انجام دیں گی۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ وائٹ ہاوس کی موجودہ ترجمان سارہ سینڈر جمعے کو اپنی ذمہ داریاں چھوڑ دیں گی۔

میلانیا ٹرمپ نے اپنے شوہر ڈونلڈ ٹرمپ کی راہ پر چلتے ہوئے ٹویٹر پر تحریر کیا کہ ’میرے خیال میں ایڈمنسٹریشن اور ملک کے لیے اسٹیفنی گریشم سے بہتر کوئی بھی خدمات انجام نہیں دے سکتا‘۔

غیر ملکی میڈیا کا کہنا تھا کہ 42 سالہ گریشم ایریزونا ری پبلیکن پارٹی سے تعلق رکھتی ہیں جنہیں ڈونلڈ ٹرمپ نے سنہ 2015 اپنی صدراتی مہم کے دوران میڈیا کے معاملات دیکھنے کےلیے رکھا تھا۔

گریشم 2017 میں وائٹ ہاؤس کی ڈپٹی پریس سیکریٹری کی حیثیت سے بھی خدمات انجام دے چکی ہیں اور گریشم میلانیا ٹرمپ کے اسٹاف میں بھی کام کرچکی ہیں۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہناتھا کہ اسیٹفنی گریشم ڈونلڈ ٹرمپ کے اقتداد میں آنے کے بعد تیسری سیکریٹری اطلاعات مقرر ہوئی ہیں، ٹرمپ کی صدارت میں پہلی پریس سیکریٹری سائن اسپائیسر تھی جنہوں نے چھ ماہ بعد ہی اپنے عہدے سے استعفیٰ دے دیا تھا۔

مزید پڑھیں : ترجمان وائٹ ہاؤس سارہ سینڈرز کا عہدہ چھوڑنے کا فیصلہ

خیال رہے کہ رواں ماہ 13، 14 جون کو یہ خبر عام ہوئی تھی کہ وائٹ ہاؤس کی ترجمان سارا سینڈرز نے عہدہ چھوڑنے کا فیصلہ کرلیا ہے جب کی صدر ٹرمپ نے تصدیق کی تھی۔

امریکی میڈیا کے مطابق ملکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ اس ماہ کے آخر میں سارہ سینڈرز عہدہ چھوڑ دیں گی، مجھے امید ہے کہ وہ آرکنساس کے گورنر کیلئے میدان میں آئیں گی۔

سارہ سینڈرز کے والد آرکنساس کے گورنر رہ چکے ہیں، سارہ سینڈرز مستقبل میں گورنر کا انتخاب لڑنے کا ارادہ رکھتی ہیں، ماہرین نے خیال ظاہر کیا ہے کہ وہ انتخابات لڑنے کے پیش نظر عہدے سے مستعفی ہوں گی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں