The news is by your side.

Advertisement

بھارتی طلبا پاکستانی نوجوان سے اظہار تشکر کیوں کررہے ہیں ؟

کراچی: کہتے ہیں کہ انسانیت، مذہب اور قومیت پر غالب آجاتی ہے، ایسا ہی کچھ کردکھایا پاکستانی نوجوان معظم خان نے، جس نے ہزاروں بھارتی طلبا کی جان بچاکر دنیا کا دل جیت لیا۔

تفصیلات کے مطابق روس یوکرین جنگ کے دوران دنیا کے مختلف ممالک سے تعلق رکھنے والے ہزاروں طالب علم جنگ زدہ علاقوں (لیویو، ترنوپل) میں پھنس گئے، جن میں بھارتی طلبا بھی شامل تھے۔

بھارتی سفارت خانے نے اپنے ہی طلبا کی مدد سے انکار کیا تو لاچار ومجبور بھارتیوں کے لئے پاکستانی شہری معظم خان ان کے لئے ‘فرشتہ’ ثابت ہوئے، جنہوں نے نامساعد حالات میں کم وبیش ڈھائی ہزار بھارتی طلبہ کو اپنی ٹوارزم کمپنی کی مدد سے کیف سے نہ صرف باہر نکالا اور انہیں رومانیہ،سلوواکیہ، ہنگری اور پولینڈ کی سرحدوں تک پہنچایا۔یوکرین، انڈیا، طلبہ پاکستانی شہری معظم خان کا ان دنوں میڈیا اور سوشل میڈیا پر خوب چرچا ہے بھارت سمیت کئی ملکوں میں ان کی بہادری کی تعریفیں کی جارہی ہیں جبکہ بحفاظت بھارت پہنچنے والے طلبا کی اکثریت نے انہیں فرشتہ قرار دیا اور ان کے لئے واٹس ایپ پر تہنیتی پیغام بھی بھیجے۔

معظم خان ضلع ہری پور کی تحصیل غازی سے گیارہ سال قبل یوکرین گئے تھے، جہاں انہوں نے ترنوپل سے سِول انجینئرنگ کی تعلیم حاصل کی لیکن پھر اپنا پیشہ بدل لیا اور ٹوارزم کا کاروبار شروع کیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں