site
stats
کھیل

مکی آرتھر 1992 کی طرح پاکستان کو ورلڈ کپ چیمپئن بنوانا چاہتے ہیں، معین خان

کراچی : سابق کپتان معین خان نے کہا ہے کہ آزادی کپ نوجوان کھلاڑیوں کے لیے بہترین موقع ہے وہ پہلی مرتبہ ہوم گراؤنڈ پر ہوم کراؤڈ کے دباؤ میں میچ کھیلیں گے جس سے بہت کچھ سیکھنے ملے گا۔

وہ اے آر وائی نیوز کی براہراست نشریات میں میزبان نجم العارفین سے گفتگو کر رہے تھے اسٹار وکٹ کیپر نے کہا کہ پاکستان میں کرکٹ مل کر واپس لائیں گے جس کے لیے ورلڈ الیون کی آمد بارش کی آمد ثابت ہوئی ہے۔

سابق وکٹ کیپر بلے باز معین خان نے کہا کہ موجودہ کوچ مکی آرتھر کی خواہش ہے کہ پاکستان 1992 کی طرح ورلڈ کپ جیتے اور وہ اسی مقصد کے لیے آہاتہ آہستہ اپنے ہدف کی طرف کی بڑھ رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ مکی آرتھر قومی کرکٹ ٹیم پر بہت محنت کر رہے ہیں جب کہ سرفراز احمد کی شکل میں بہترن کپتان میسر آیا ہے اور وہ چھے کپتان ثابت ہو رہے ہیں جن کو ٹیم کے دیگر کھلاڑی بھی فالو کر رہے ہیں اس طرح ایک وننگ کمبینیشن بن چکا ہے۔


 پاکستان بمقابلہ ورلڈ الیون، کھلاڑی خوبصورت رکشوں پر گراؤنڈ کا چکر لگائیں گے 


معین خان نے کہا کہ یہ ایونٹ پاکستان کرکٹ کا احیاء ثابت ہو سکتی ہے اس لیے اس کو جتنا سپورٹ کرسکتے ہیں ہمیں کرنا چاہیے اور منفی باتوں سے گریز کرنا چاہیے،لاہور کے بعد اب انشااللہ ملک بھر میں میچز ہوں گے۔

انہوں نے کہا کہ گزشتہ برس ہونے والیے پی ایس ایل فائنل کے لیے کئی نامور انٹرنیشنل کھلاڑی آئے تھے جس میں ڈیرن سیمی کا بھی کردار تھا ان کی وجہ سے بہت سے انٹرنیشنل کھلاڑی پاکستان آئے تھے اور جو کھلاڑی پاکستان نہیں آئے تھے انہیں افسوس تھا اور انہوں نے خود پی ایس ایل میں نہ آنے والے کھلاڑیوں نے پیغامات کے ذریعے اظہار افسوس بھی کیا تھا۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top