The news is by your side.

Advertisement

کینسر کی شکار ماں نے 9 سالہ بیٹی کو قتل کردیا

روس میں کینسر کا شکار ایک ماں نے اپنی 9 سالہ بچی کو گلا دبا کر قتل کردیا، اس کے بعد خود بھی آٹھویں منزل سے چھلانگ لگا دی۔

یہ افسوسناک واقعہ روس کے شہر نووسبرسک میں پیش آیا، 29 سالہ ماریہ آٹھویں منزل سے نیچے برف پر گری اور اس کی کراہیں سن کر قریبی افراد اس کی مدد کو پہنچے۔

ایک عینی شاہد کے مطابق اس نے ماریہ سے پوچھا کہ کیا ہوا ہے، لیکن وہ ایک ہی بات دہراتی رہی کہ وہ اپنی ٹانگیں اور ہاتھ محسوس نہیں کر پارہی۔

پڑوسیوں کے کال کرنے پر پیرا میڈک عملہ وہاں پہنچا اور خاتون کو ایمبولینس میں ڈال کر اسپتال کی طرف روانہ کیا۔ اس دوران پولیس ماریہ کے گھر کا جائزہ لینے اندر داخل ہوئی تو داخلی دروازے کے سامنے ہی 9 سالہ بچی اپنے خون میں لت پت پڑی تھی۔

بچی کے فارنسک تجزیے سے علم ہوا کہ اسے قتل کرنے سے قبل اس کے سر پر کسی بھاری شے سے وار کیا گیا۔ پولیس کو ماریہ کے گھر سے ایک خط بھی ملا جس میں اس نے لکھا تھا کہ میں اس جان لیوا سر درد کے ساتھ مزید زندہ نہیں رہ سکتی۔

اس نے اپنے خط میں یہ بھی لکھا تھا کہ وہ اپنی بیٹی سے بہت محبت کرتی ہے۔

پولیس نے ماں کے خلاف کم عمر بچی کو قتل کرنے کا مقدمہ درج کرلیا ہے، پولیس کا کہنا ہے کہ خاتون کے صحت یاب ہونے کے بعد اس سے تفتیش کی جائے گی۔

دوسری جانب خودکشی کی کوشش کرنے کے لیے گرنے پر ماریہ کے جسم میں کئی فریکچرز ہوگئے ہیں تاہم اس کی حالت خطرے سے باہر ہے۔

پولیس کا ماننا ہے کہ 29 سالہ ماں اپنی بیماری کی وجہ ذہنی طور پر شدید ابتری کا شکار تھی یہی وجہ ہے کہ اس نے اپنی بیٹی کو قتل کیا اور پھر خودکشی کی کوشش کی۔

خاتون کے شوہر کے بارے میں علم ہوا ہے کہ وہ فوج میں ملازم ہے، تاہم یہ معلوم نہیں ہوسکا کہ آیا ان دونوں کی شادی برقرار ہے یا نہیں۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں