The news is by your side.

Advertisement

کارحادثے میں‌ معذور ہونے والی منیبہ مزاری کی 10 سال بعد چہل قدمی— ویڈیو دیکھیں

کراچی / نیویارک: پاکستان کی معذور مگر حوصلہ مند معروف مصورہ اور اقوام متحدہ پاکستان کی خیر سگالی سفیر منیبہ مزاری کو روبوٹک ٹانگیں لگا دیں جس کے بعد وہ ایک بار پھر وہ جلد بغیر کسی سہارے کے چلتی نظر آئیں گی۔

تفصیلات کے مطابق بلوچ قدامت پسند گھرانے سے تعلق رکھنے والی منیبہ مزاری کے ساتھ 10 برس قبل ایک اندوہناک کار حادثے پیش آیا تھا جس کے نتیجے میں ان کی اسپائنل کورڈ کو نقصان پہنچا اور وہ چلنے پھرنے سے قاصر ہوگئی تھیں۔

کارحادثے میں معذوری کے باوجود منیبہ کے عزم اور حوصلے میں کمی نہیں آئی اور انہوں نے وہیل چیئر پر نہ صرف مصوری کے کام کو جاری رکھا بلکہ بلند حوصلے کے ساتھ   پاکستان میں صنفی مساوات کے لیے بھی کام کر تی رہیں۔

مزید پڑھیں: بالی ووڈ اداکار منیبہ مزاری سے متاثر

سنہ 2015 میں پاکستان کی باصلاحیت بیٹی کی ہمت اور عزم کو مدنظر رکھتے ہوئے اقوام متحدہ پاکستان نے انہیں خیر سگالی سفیر برائے خواتین بھی مقرر کیا۔ اقوام متحدہ کے مطابق منیبہ کی کہانی دنیا بھر کے معذور افراد کے لیے ایک مثال ہے جنہوں نے معذوری کو اپنی راہ میں رکاوٹ نہیں بننے دیا اور اپنے خوابوں کی تعبیر حاصل کی۔

معذوری کے باوجود منیبہ نے دنیا کے ہر پلیٹ فارم پر وہیل چیئر کے ساتھ لوگوں اور خصوصا خواتین کے حوصلوں کو بلند کرنے کے لیے تقاریر کیں اس دوران اُن سے بالی ووڈ اداکاروں نے بھی ملاقاتیں کیں۔

اطلاعات کے مطابق کار حادثے کے بعد منیبہ کے شوہر نے اُن سے علیحدگی اختیار کرتے ہوئے اپنی راہیں جدا کرلیں تھیں مگر اُس کے باوجود انہوں نے اپنی معذوری کو راہ میں رکاوٹ نہیں بننے دیا اور کامیابیاں سمیٹتے ہوئے اپنے سفر کو جاری رکھا۔

یہ بھی پڑھیں: بھارتی نوجوان کا منیبہ مزاری کو انوکھا خراج تحسین

ایک روز قبل مصورہ نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر اپنی تصاویر جاری کیں جس میں اُن کے سرجری کے بعد روبوٹک ٹانگیں لگی ہوئی تھیں، منیبہ نے لکھا کہ ’آج ہم بہن بھائیوں کے لیے بہت بڑا اور خوشی کا دن ہے کیونکہ میں 10 سال بعد میں چلنے کے قابل ہورہی ہوں‘۔

کچھ دیر قبل منیبہ نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر اپنی ایک ویڈیو جاری کی جس میں وہ روبوٹک ٹانگوں کے ساتھ چلنے کی بھرپور کوشش کررہی ہیں، انہوں نے دعاؤں میں یاد رکھنے پر تمام لوگوں کا شکریہ ادا کیا اور اپنی میڈیکل ٹیم کے جذبے کو بھی سراہا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں