The news is by your side.

Advertisement

نواز شریف کی حاضری سے استثنیٰ کی درخواستیں مسترد

اسلام آباد : احتساب عدالت میں نواز شریف کی حاضری سے استثنیٰ کی درخواستیں مسترد کردیں اور کہا کہ اہلیہ کی بیماری کوحاضری سےاستثنیٰ کا جوازنہیں بنایا جاسکتا۔

تفصیلات کے مطابق احتساب عدالت نے سابق وزیراعظم نواز شریف، ان کی صاحبزادی مریم نواز اور داماد کیپٹن (ر) صفدر کی عدالت میں حاضری سے استثنیٰ کی درخواستیں مسترد کرتے ہوئے تحریری فیصلہ جاری کردیا۔

تحریری حکم نامہ جج محمد بشیر نے جاری کیا۔

حکم نامے کے مطابق اہلیہ کی بیماری کوحاضری سےاستثنیٰ کا جوازنہیں بنایا جاسکتا، میڈیکل رپورٹ کے مطابق ڈاکٹرز نے کلثوم نواز کی بیماری پر کافی حد تک قابو پالیا گیا ہے اور ان کی 6 کیمو تھراپی ہوچکی ہیں جب کہ مستقبل میں علاج کیے لئے ریڈیو تھراپی کی تجویز دی گئی ہے۔

تحریری حکم نامہ میں مزید کہا کہ غیرملکی گواہوں کے ویڈیو لنک بیان کے وقت لندن جاکر اٹارنی مقرر کرنے کا جواز بھی تسلیم نہیں کرتے۔

یاد رہے کہ گذشتہ سماعت میں احتساب عدالت نے سابق وزیر اعظم نواز شریف، ان کی مریم نواز اور داماد کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کی حاضری سے استثنیٰ کی درخواست خارج کردی تھی اور کیس میں 4 گواہوں کے بیانات قلمبند کر لیے گئے تھے۔


مزید پڑھیں : احتساب عدالت میں نواز شریف کی حاضری سے استثنیٰ کی درخواست خارج


خیال رہے کہ سابق وزیراعظم نوازشریف، مریم نواز اور داماد کیپٹن (ر)صفدرنے نیب ریفرنسزمیں 24 فروری سے دو ہفتے کیلئے حاضری سے استثنیٰ کیلئے درخواست دائر کررکھی تھی۔

جس میں مؤقف اختیار کیا گیا تھا کہ نواز شریف کی اہلیہ لندن میں بیمار ہیں، ان کے ٹیسٹ ہونے ہیں۔ ہم ہمیشہ عدالت میں پیش ہوتے رہے ہیں، نواز شریف کی لندن میں موجودگی ضروری ہے، نواز شریف کو لندن جانے کی اجازت دی جائے۔

خیال رہے کہ 19 اکتوبر کو احتساب عدالت نے ایون فیلڈ ریفرنس میں نواز شریف، مریم نواز اور کیپٹن ریٹائرڈ صفدر پر فرد جرم عائد کی تھی جبکہ اسی روز عزیزیہ اسٹیل ریفرنس میں بھی نواز شریف پر فرد جرم عائد کی گئی تھی۔

بعد ازاں عدالت کا وقت ختم ہونے کے باعث اس سے اگلے روز 20 اکتوبر کو فلیگ شپ انویسٹمنٹ ریفرنس میں بھی نامزد ملزم نواز شریف پر فرد جرم عائد کردی گئی۔ جبکہ ان تمام کیسز میں ملزمان نے صحت جرم سے انکار کیا تھا۔

واضح رہے کہ سپریم کورٹ کی جانب پاناما پیپرز کیس کے فیصلے کی روشنی میں نیب کی جانب سے نواز شریف اور ان کے صاحبزادوں حسن نواز اور حسین نواز کے خلاف 3 ریفرنسز دائر کیے گئے تھے جبکہ مریم نواز اور کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کا نام ایون فیلڈ ایونیو میں موجود فلیٹس سے متعلق ریفرنس میں شامل ہے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں