یورپ میں نئے جوہری ہتھیار نصب نہیں کیے جائیں گے، نیٹو nato
The news is by your side.

Advertisement

یورپ میں نئے جوہری ہتھیار نصب نہیں کیے جائیں گے، نیٹو

برسلز: نیٹو چیف جینس اسٹولین برگ نے کہا ہے کہ یورپ میں نئے جوہری ہتھیار نصب نہیں کیے جائیں گے۔

غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق مغربی دفاعی اتحاد نیٹو کے چیف نے کہا ہے کہ روس کی طرف سے امریکا کے ساتھ جوہری ہتھیاروں سے متعلق پرانے معاہدے کی خلاف ورزی کے باوجود اس اتحاد کی جانب سے یورپ میں کوئی نئے جوہری ہتھیار نصب نہیں کیے جائیں گے۔

نیٹو چیف اسٹولین برگ نے کہا ہے کہ ماسکو سوویت دور میں واشنگٹن کے ساتھ طے پانے والے جوہری ہتھیاروں میں کمی کے جس معاہدے کی خلاف ورزی کا مرتکب ہوا اس کے بعد ہی امریکی صدر ٹرمپ نے امریکا کے اس روسی امریکی سمجھوتے سے اخراج کا اعلان کیا تھا۔

اسٹولین برگ نے یہ بھی کہا ہے کہ ماسکو کی طرف سے اس معاہدے کی خلاف ورزی پر نیٹو اتحاد اپنا اسٹریٹیجک ردعمل ظاہر کرے گا تاہم یہ امکان بہت کم ہے کہ یورپ میں کوئی اضافی جوہری ہتھیار نصب کیے جائیں گے۔

نیٹو چیف کے مطابق ماسکو کی جانب سے زمین سے فائر کیے جانے والے اس نئے میزائل کی تیاری کے بعد یہ معاہدہ غیر موثر ہوگیا ہے اور نیٹو کے رکن تمام ممالک اس بات پر متفق ہیں کہ اس معاملے میں خطرہ اور ایک بڑا چیلنج روس کا رویہ ہے۔

واضح رہے کہ ٹرمپ کی قومی سلامتی کے مشیر جان بولٹن نے گزشتہ روز روسی صدر پیوٹن سے ملاقات کے بعد کہا تھا کہ واشنگٹن نے روس کے ساتھ سمجھوتے سے اپنے جس اخراج کا اعلان کیا ہے اس پر عمل درآمد بھی کیا جائے گا۔

جان بولٹن کے مطابق واشنگٹن کے اس فیصلے پر روس کے علاوہ امریکا کے اتحادی چند یورپی ممالک نے اعتراضات کیے ہیں تاہم ٹرمپ انتظامیہ اس بارے میں اپنے فیصلے کو حقیقت کا رنگ دینے کا تہیہ کیے ہوئے ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں