The news is by your side.

Advertisement

کیا کرونا وائرس گرمیوں میں ختم ہوجائے گا؟

اسلام آباد: نیشنل ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی (این ڈی ایم اے) کے ترجمان نے کہا ہے کہ کرونا وائرس گرمی کی شدت سے ختم ہونے کی بات بے بنیاد ہے۔

ترجمان این ڈی ایم اے کے ترجمان آصف محمود نے ہفتے کے روز کرونا وائرس سے متعلق اعلامیہ جاری کیا جس میں اُن کا کہنا تھا کہ وائرس سے اموات کی شرح تو نہیں بڑی البتہ یہ تیزی سے پھیلتا ہے جس کی وجہ سے ہمیں خطرے کا سامنا ہے۔

آصف محمود کا کہنا تھا کہ ہمارے یہاں یہ بات عام ہے کہ گرمی شروع ہونے کے بعد وائرس کا زور ٹوٹ جائے گا اور یہ ختم ہوجائے گا، یہ بات بالکل بے بنیاد ہے۔

مزید پڑھیں: کرونا وائرس کھلی فضا میں گھنٹوں اور اشیا کی سطح پر کئی دنوں تک زندہ رہتا ہے، تحقیق

اُن کا کہنا تھا کہ وائرس کے حوالے سے اگر مناسب احتیاطی تدابیر اختیار نہ کی گئیں اور اس پر قابو نہ پایا گیا تو موسم گرما کے دوران پڑنے والی شدید گرمی کے باوجود بھی یہ برقرار رہے گا۔

آصف محمود کا کہنا تھا کہ ’وائرس کو جراثیم کش ادویہ کے اسپرے سے ہی ختم کیا جاسکتا ہے، کرونا کو پھیلنے سے روکنے کا واحد علاج یہ ہے کہ متاثرہ شخص یا اُس سے ملاقات کرنے والے کو قرنطینہ کردیا جائے۔

اُن کا کہنا تھا کہ این ڈی ایم اے سخت نگرانی کررہا ہے اور تمام مسافروں کی اسکریننگ بھی کررہے ہیں، یہ سلسلہ اُس وقت تک جاری رہے گا جب تک وائرس کا خطرہ کم نہیں ہوجاتا۔

واضح رہے کہ کورونا وائرس نے چین کے بعد یورپ، خلیجی ممالک اور دیگر ایشیائی ممالک میں ڈیرے ڈالنا شروع کردیئے ہیں، چین کے بعد سب سے زیادہ ہلاکتیں اٹلی اور ایران میں ہوئی۔

یہ بھی پڑھیں: برطانیہ میں نومولود بھی کرونا وائرس سے متاثر

یاد رہے کہ کرونا وائرس دنیا کے  134 سے زائد ممالک میں پھیل چکا ہے، جس سے اب تک مرنے والوں کی تعداد 5 ہزار 436 سے تجاوز کرگئی جبکہ متاثرہ افراد کی تعداد میں 1 لاکھ 45 ہزار 600 سے تجاوز کرگئی، دوران علاج 75 ہزار سے زائد مریض شفایاب بھی ہوئے ہیں۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں