The news is by your side.

Advertisement

درد کے بغیر ڈائیلاسز، مریضوں کے لیے اچھی خبر

دبئی ہیلتھ اتھارٹی (ڈی ایچ اے) نے ساؤنڈ ویو کا استعمال کرتے ہوئے مریضوں کو کیتھیٹرز کے ذریعے ڈائیلاسز کے لیے تیار کرنے کے لیے جدید ٹیکنالوجی کا استعمال شروع کردیا۔

عرب میڈیا کی رپورٹ کے مطابق ڈی ایچ اے مشرقی وسطیٰ اور مشرقی یورپ میں صحت کا پہلا ادارہ ہے جو گردے کی خرابی کے مریضوں کے لیے جدید ٹیکنالوجی کا استعمال کرتا ہے۔

گزشتہ ہفتے راشد اسپتال نے اس ٹیکنالوجی کا استعمال کرتے ہوئے ایک 20 سالہ مریض کا پہلا آپریشن کرنے میں کامیابی حاصل کی جو گردے کی بیماری میں مبتلا تھا اور اسے فوری طور پر ڈائیلاسز کا عمل شروع کرنے کی ضرورت تھی۔

راشد اسپتال کے ویسکولر سرجری ڈیپارٹمنٹ کے ڈاکٹر اس ٹیکنالوجی کو استعمال کرنے اور کیتھیٹر کے ذریعے اور بغیر سرجری کے مریض کو ہیمو ڈائلیسس کے لیے تیار کرنے میں کامیاب رہے۔

یہ پڑھیں: ڈائیلاسز کا عمل اب مصنوعی گردوں کے ذریعے انجام پائے گا

اس عمل کے بارے میں بتاتے ہوئے راشد اسپتال میں ویسکولر سرجری کے شعبہ کی سربراہ اور میڈیکل ٹیم کے سربراہ ڈاکٹر دینا القدرہ نے بتایا کہ مریض کئی سالوں سے گردے کی خرابی کا شکار تھا۔

انہوں نے بتایا کہ ‘مریض نے راشد اسپتال آیا تو اور اس کے ضروری ٹیسٹ کیے گئے اس سے پہلے کہ اسے ایک روزہ آپریشنز کے شعبے میں یہ طریقہ کار کرنے کے لیے منتقل کیا جائے، جس میں مقامی اینستھیزیا کے تحت 34 منٹ لگے یہ طریقہ کار کامیاب رہا اور مریض ایک گھنٹے میں ہسپتال سے چلا گیا۔

انہوں نے نشاندہی کی کہ ڈی ایچ اے میں اس قسم کے آپریشن کرنے سے مریضوں کے لیے اس سروس سے مستفید ہونے کا راستہ کھل جائے گا جس سے روایتی سرجری کے مقابلے میں ان کے زیادہ مالی اخراجات اور اسپتال میں قیام کی بچت ہوگی۔ یہ ڈاکٹر کے وقت اور محنت کو بچانے میں بھی معاون ثابت ہوگا اور بہت سے مریضوں کی خدمت کا موقع فراہم کرے گا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں