The news is by your side.

Advertisement

گارڈ کی فائرنگ سے زخمی ہونے والا پینگولین ہلاک ہوگیا

کراچی : گزشتہ دنوں کراچی سے ملنے والے پینگولین کو ہلاک کرنے کے واقعے کا سندھ وائلڈ لائف نے نوٹس لے لیا۔

تفصیلات کے مطابق زمزمہ کلفٹن میں گزشتہ روز ایک پلاٹ سے نکلنے والے پینگولین کو سیکیورٹی گارڈ نے پانچ گولیاں مار کر شدید زخمی کردیا تھا، جو دوران علاج ہلاک ہوگیا۔

سکیورٹی گارڈ کا کہنا تھا کہ مذکورہ جانورمجھ پر حملہ کررہا تھا جس کی وجہ سے مجھے اپنے دفاع میں گولی چلانا پڑی.

پاکستان اینمل ویلفیئر سوسائٹی کی ڈائریکٹر اورکو فاؤنڈرماہرہ عمر کا کہنا تھا کہ ایک شخص نے سوشل میڈیا پر اس واقعے کی پوسٹ تصاویر کے ساتھ شائع کی جس پر ایکشن لیتے ہوئے انہوں نے ڈاکٹر علی ایاز کو فوری طور پر ہدایات جاری کیں کہ مذکورہ پینگولین کو طبی امداد فراہم کی جائے.

ڈاکٹر علی ایاز اس کو اپنے کلینک لے آئے اور اس کاعلاج کیا مگروہ جانبرنہ ہوسکا، پینگولین کو تین گولیاں پیٹ میں اور دو اس کی ٹانگ میں لگیں.

سندھ وائلڈ لائف کے عہدیداران نے متعلقہ حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ واقعے کی تحقیقات کی جائیں اور ذمہ داران کیخلاف قانونی کارروائی کی جائے.

واضح رہے کہ پینگولین دنیا بھر میں سب سے زیادہ اسمگل کیا جانے والا ایک نایاب نسل کا جانور ہے اور اس کی نسل ناپید ہوتی جا رہی ہے.

پینگولین کا سائز تین فٹ کے لگ بھگ ہوتا ہے پاک و ہند میں پایا جانے والا پینگولن ایک بے ضرر اور نایاب جانور ہے جس کی نسل ختم ہونے کے قریب ہے۔

یہ چیونٹی خور جانوروں کی نسل سے تعلق رکھنے والا معصوم سا جانور ہے، پینگولین محض کیڑے مکوڑے دیمک اور چیونٹیاں کھاتا ہے۔

اس کی لمبی تھوتنی اور باریک لمبی زبان ہوتی ہے، جسم پر سخت چھلکے ہوتے ہیں۔ خطرے کے وقت وہ خود کو گیند کی طرح لپیٹ لیتا ہے۔

پاکستان میں لوگ اپنی لاعلمی کی وجہ سے اس نایاب نسل کے جانور کو خوفناک بلا سمجھ کر ہلاک کردیتے ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں