The news is by your side.

Advertisement

فائزر بڑا اعزاز حاصل کرنے والی پہلی کرونا ویکسین بن گئی

واشنگٹن: فائزر کی ویکسین مکمل منظوری حاصل کرنے والی پہلی کرونا ویکسین بن گئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق پیر کو 16 سال اور اس سے زیادہ عمر کے لوگوں کے لیے فوڈ اینڈ ڈرگ ایڈمنسٹریشن نے فائزر-بائیواین ٹیک کی 2 ڈوز والی ویکسین کو مکمل منظوری دے دی ہے، جس سے فائزر ویکسین یہ آخری رکاوٹ بھی عبور کرنے والی پہلی ویکسین بن گئی ہے۔

ماہرین نے اس فیصلے کو سراہا ہے، ان کا کہنا ہے کہ اس منظوری کی مدد سے ویکسین کے لیے لوگوں میں ہچکچاہٹ میں کمی آئے گی، اور ڈیلٹا ویرینٹ سے جھوجھتے امریکا میں ویکسین لگوانے کی نئی لہر اٹھنے کا امکان ہے۔

ایف ڈی اے کمشنر جینٹ ووڈکاک نے اپنے بیان میں کہا کہ اس ویکسین کی منظوری ایک سنگ میل ہے، کرونا وبا کے خلاف ہماری جنگ تاحال جاری ہے، اگرچہ لاکھوں لوگ کرونا ویکسین لگوا چکے ہیں تاہم اب ان لوگوں کو بھی اعتماد ملے گا جو ویکسین لگوانے سے ہچکچا رہے تھے۔

محققین کا آسٹرازینیکا کے مقابلے میں فائزر ویکسین کی تاثیر سے متعلق انکشاف

مکمل منظوری ملنے کے بعد فائزر کی کرونا ویکسین کو اب برانڈ نیم Comirnaty سے مارکیٹ کیے جانے کا امکان ہے، 11 دسمبر 2020 کو ایمرجنسی استعمال کی منظوری ملنے کے بعد فائزر ویکسین کی کروڑوں ڈوز پہلے ہی لگائی جا چکی ہیں۔

اس ویکسین کو مکمل منظوری دیے جانے کا فیصلہ دراصل ویکسین کے کلینکل ٹرائل سے حاصل ہونے والے تازہ ترین ڈیٹا پر مبنی ہے، جس میں طویل دورانیے کا فالو اپ بھی شامل ہے، جب کہ اس کے محفوظ اور مؤثر ہونے کے لیے اسے 40 ہزار لوگوں پر آزمایا گیا۔

واضح رہے کہ امریکی فوج نے اعلان کیا تھا کہ وہ ویکسین کو مکمل منظوری ملتے ہی اسے لازمی قرار دے دے گی۔

یہ ویکسین 12 سے 15 سال عمر کے بچوں کے لیے تاحال ایمرجنسی استعمال کے تحت ہی دستیاب ہوگی، تاہم چوں کہ اسے مکمل منظوری مل گئی ہے تو فزیشنز اگر مفید پائیں تو 12 سال تک کے بچوں میں بھی اسے تجویز کر سکتے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں