The news is by your side.

Advertisement

رجسٹرار اسلام آباد ہائی کورٹ کو توہین عدالت کا نوٹس جاری

اسلام آباد: وکلا چیمبرز گرانے سے متعلق کیس میں عدالت عظمیٰ نے رجسٹرار اسلام آباد ہائی کورٹ کو توہین عدالت کا نوٹس جاری کردیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ میں اسلام آباد میں وکلا چیمبرز گرانے سے متعلق نظرثانی کیس کی سماعت ہوئی، عدالت عظمیٰ نے عدالت نے وکلا چیمبرز گرانے اور عدالتوں کی منتقلی سے متعلق رپورٹ طلب کی تھی۔

آج ہونے والی سماعت میں رجسٹرار اسلام آباد ہائی کورٹ نے اپنی رپورٹ سپریم کورٹ میں جمع کرائی، سپریم کورٹ نے رجسٹرار اسلام آبادہائی کورٹ کی رپورٹ پر عدم اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے انہیں توہین عدالت کو نوٹس جاری کردیا۔

توہین عدالت کا نوٹس وکلا چیمبرز گرانے سے متعلق نظرثانی کیس میں جاری کیا گیا، سپریم کورٹ نے رجسٹرار اسلام آباد ہائی کورٹ کو سات دن میں جواب جمع کرانے کا حکم بھی دیا۔

سماعت کے موقع پر چیف جسٹس نے ریمارکس دئیے کہ رجسٹرار ہائی کورٹ نے عدالتی احکامات کو سنجیدہ نہیں لیا، سپریم کورٹ کے احکامات پر عملدرآمد جونیئر افسران پر چھوڑ دیا، رجسٹرار اسلام آباد ہائی کورٹ عدالتی فیصلے پر عملدرآمد میں ناکام رہے۔

اپنے ریمارکس میں چیف جسٹس نے کہا کہ کیوں نہ رجسٹرار اسلام آباد ہائی کورٹ کو معطل کر دیں؟ رجسٹرار اسلام آباد ہائی کورٹ کا دماغ خراب ہے اس موقع پر ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے سپریم کورٹ کو آگاہ کیا کہ غیر قانونی جگہ پر قائم عدالتیں مسمار کر دی ہیں جس پر چیف جسٹس نے کہا کہ عدالتوں کا ڈھانچہ ہماری کوششوں سے گرایا گیا، اسلام آباد ہائی کورٹ کے رجسٹرار نے تو کچھ بھی نہیں کیا۔

چیف جسٹس جسٹس گلزار احمد نے سخت ریمارکس دئیے کہ توہین عدالت میں سزا ہوئی تو رجسٹرار نااہل ہوکر گھر بیٹھ جائے گا، بعد ازاں سپریم کورٹ نے نظرثانی درخواست پر سماعت ملتوی کر دی۔

یاد رہے کہ سپریم کورٹ نے دو ماہ میں وکلا چیمبرز اور غیر قانونی جگہ پر قائم عدالتیں مسمار کرنے کا حکم دیا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں