The news is by your side.

Advertisement

توہین آمیز خاکوں کے خلاف مذمتی قرارداد متفقہ طور پر منظور

اسلام آباد:  قومی اسمبلی اجلاس میں توہین آمیز خاکوں کے خلاف پیش کی گئی مذمتی قرارداد کو متفقہ طور پر منظور کرلیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق مذمتی قرارداد وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی کی جانب سے پیش کی گئی قرارداد میں کہا گیا کہ یہ ایوان فرانس میں ہوئے توہین آمیز خاکوں اور حضورﷺکی شان میں گستاخی کی شدید الفاظ میں مذمت کرتا ہے، ساتھ ہی فرانسیسی صدر کے توہین آمیز الفاظ کی بھی سخت مذمت کرتا ہے۔

قرارداد کے متن میں کہا گیا کہ فرانس کی جانب سے حجاب کے خلاف اقدامات قابل مذمت ہیں، اس کے علاوہ یہ ایوان پندرہ مارچ کو اسلاموفوبیا پر عالمی دن منانےکا مطالبہ کرتا ہے۔

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کی جانب سے پیش کی گئی قرارداد میں کہا گیا کہ فوری طور پر او آئی سی کا ہنگامی اجلاس طلب کیا جائے، جس میں گستاخانہ خاکوں سے متعلق او آئی سی او رغیر او آئی سی ممالک توہین آمیز خاکوں کو روکنےکے لئے قانون سازی کریں۔

یہ بھی پڑھیں:  پاکستان کا گستاخانہ خاکوں کی اشاعت پر فرانس سے شدید احتجاج

واضح رہے کہ فرانسیسی صدر ایمانویل میکرون کی جانب سے  توہین آمیز کارٹونز کے سلسلے میں مسلمانوں کے جذبات مجروح کرنے والے بیان پر آج فرانسیسی سفیر کو دفتر خارجہ طلب کیا گیا تھا۔

دوسری جانب دنیا کے مختلف شہروں میں فرانسیسی صدر میکرون کے توہین آمیز بیان کے خلاف مظاہرے شروع ہو گئے ہیں، مظاہرین صدر میکرون کی تصویریں بھی جلا رہے ہیں۔فلسطین اور لبنان کے مختلف شہروں ميں مظاہروں کے دوران مسلمانوں نے فرانسیسی پرچم کو نذر آتش کیا اور میکرون کی تصویریں بھی جلا دیں، شام میں بھی فرانسیسی صدر کے خلاف مظاہرے ہوئے۔

ادھر پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان سمیت عالمی مسلم رہنماؤں نے بھی فرانسیسی صدر کے بیان کے خلاف سخت ردِ عمل ظاہر کیا ہے، ترک صدر اردگان نے کہا تھا کہ فرانس کے صدر کا دماغ خراب ہوگیا ہے، اسے اپنے دماغ کا علاج کرانا چاہیے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں