The news is by your side.

Advertisement

سویٹزرلینڈ: بس میں آتشزدگی کے باعث ملکی تاریخ کا بد ترین ٹریفک جام

برن : یورپی یونین کے رکن ملک سویٹزرلینڈ کی سان برنیڈینو نامی سرنگ میں جرمن سیاحوں کی بس میں آتشزدگی کے باعث ملکی 19 سالہ تاریخ کا بد ترین ٹریفک جام ہوگیا.

تفصیلات کے مطابق سویٹزرلینڈ کی سان برنیڈینو نامی سرنگ میں جرمنی کے سیاحوں کو لانے والی بس میں اچانک آگ بھڑک اٹھی جس کے باعث پیچھے آنے والی گاڑیوں کی قطاریں بن گئی اور ملکی 19 سالہ تاریخ کا بد ترین ٹریفک جام ہوگیا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ جرمنی سے تعلق رکھنے والے سیاحوں کی بس میں اچانک دھواں اٹھنے لگا جس پر ڈرائیور نے فوری طور پر سیاحوں کو بس سے اتار دیا تھا۔

غیر ملکی خبر رساں اداروں کا کہنا تھا کہ جرمنی کے سیاحوں کی بس میں آتشزدگی کے واقعے نے سنہ 2001 میں گوٹھارڈ سرنگ میں ہونے والی آتشزدگی کی یادیں تازہ کردیں جس کے نتیجے میں 11 افراد جھلس کر ہلاک ہوگئے تھے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ متاثرہ بس میں 22 مسافر سوار تھے جنہیں حادثے سے چند لمحے قبل ہی بس سے اتار لیا گیا تھا جبکہ دو افراد کو دھواں بھرجانے کے باعث طبی امداد دی جارہی ہے۔

سویٹزرلینڈ پولیس کا کہنا تھا کہ سان برنیڈینو نامی سرنگ میں بس میں آتشزدگی کے باعث 28 کلو میٹر لمبا ٹریفک جام ہوگیا تھا جو ملکی 19 سالہ تاریخ کا بدترین ٹریفک جام ہے۔

واضح رہے کہ سان برنیڈینو سرنگ مشرقی سویٹزر لینڈ کو مغربی سویٹزرلینڈ سے ملانے کا کام کرتی ہے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں