The news is by your side.

Advertisement

سعودی عرب: مقامی شہریوں‌ و کمپنیوں‌ کا انکم ٹیکس معاف کرنے کا اعلان

دوحہ : سعودی حکومت نے اپنے شہریوں اور سعودی کمپنیوں کو انکم ٹیکس سے مستثنیٰ قرار دینے کا اعلان کردیا۔

سعودی عرب کے وزیرِ خزانہ محمد الجدان نے ایک پر ہجوم پریس کانفرنس کے دوران نئے مالی سال کے لیے سعودی عرب کے بجٹ پر گفتگو کرتے ہوئے معاشی اصلاحات سے متعلق تفصیلات سے آگاہ کیا اور صحافیوں کے سوالوں کے جوابات دیے۔

اسی سے متعلق : سعودی عرب کا پاکستانی تاجروں کو 2 سال کا ملٹی پل ویزا دینے کا اعلان

سعودی وزیر خزانہ نے اپنے شہریوں کو خوش خبری سناتے ہوئے کہا کہ مقامی کاروبار کو بڑھاوا دینے اور مقامی ملازمین کی حوصلہ افزائی کے لیے آئندہ مالی سال سعودی شہریوں کو اپنی آمدنی پر کوئی ٹیکس نہیں دینا ہوگا اور نہ ہی سعودیہ کی مقامی کمپنیوں کو اپنے منافع پر کوئی ٹیکس ادا کرنا ہوگا۔

 یہ پڑھیں :  سعودی عرب نے نئی ویزا پالیسی کا اعلان کردیا

واضح رہے کہ تین سال قبل تیل کی قیمتوں میں زبردست کمی کے باعث سعودی عرب سمیت تمام خلیجی ممالک کی معیشت کو دھچکا پہنچا تھا جس کے بعد سے یہ ممالک معیشت کی بحالی کے لیے ہنگامی بنیادوں پر اصلاحات متعارف کروا رہے ہیں۔

تیل کی مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کے باعث سعودی عرب میں دیگر شعبہ جات پر بھی اثر پڑا رہے اور کئی شعبے بند ہو چکے ہیں جس پر سعودی حکومت نے کمپنیوں میں مقامی سعودی شہریوں کی ملازمت کا کوٹا مخصوص کرنے جیسے اقدامات سے غیر سعودی ملازمین کو بھی مشکلات کا سامنا ہے۔

 یہ بھی پڑھیں : سعودی عرب کا تفریحی شہر بنانے کا اعلان

اسی طرح تعاون بین الاخلیجی ممالک کی تنظیم کی جانب سے اپنے اپنے ملک میں 5 فیصد ویلیو ایڈڈ ٹیکس کو لاگو کیا جائے تاکہ پیٹولیم کے علاوہ دیگر صنعت کی حوصلہ افزائی ہو سکے تاہم آزاد حلقوں کا کہنا ہے کہ مذکورہ ٹیکس کا نفاذ ناقابلِ عمل ہوگا۔

دیکھنا یہ ہے کہ سعودیہ سمیت خلیجی ممالک تیل مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کے باعث معیشت پر اثر انداز ہونے اثرات سے کس طرح نبرد آزما ہو پاتے ہیں اور کیسے ان ممالک کی معیشت دوبارہ سے اپنے پاؤں پر کھڑا ہونے میں کامیاب ہوپاتی ہے ؟

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں