The news is by your side.

Advertisement

سعودی خواتین کی ایک اور کامیابی

ریاض: سعودی عرب میں خواتین کو معاشی عمل کا حصہ بنانے کے لیے جہاں ہر شعبے میں آگے لایا جارہا ہے، وہیں کھیلوں کے میدان میں بھی سعودی خواتین پیچھے نہیں، سعودی خواتین میں غوطہ خوری سمیت مختلف کھیلوں میں حصہ لینے کا رجحان بڑھتا جارہا ہے۔

سعودی ویب سائٹ کے مطابق سعودی عرب کے مشرقی ساحلی شہر دمام میں 40 سعودی خواتین کے گروپ نے نہ صرف غوطہ خوری میں مہارت حاصل کی بلکہ غوطہ خوری کی تربیت دینے کے امتحان میں بھی کامیابی حاصل کر لی۔

مذکورہ خواتین نے دمام کے غوطہ خوری کلب میں گزشتہ برس ماہ ستمبر میں داخلہ لیا تھا جہاں سے انہوں نے غوطہ خوری کی تربیت مکمل کرنے کے بعد دیگر خواہش مند خواتین کو تربیت دینے کے کورس بھی کیے۔

خواتین نے عالمی معیار کے مطابق تربیت مکمل کر لی جنہیں کلب کی جانب سے اسناد بھی جاری کی گئی ہیں۔

ایک اخبار سے گفتگو کرتے ہوئے ایک خاتون ٹرینر نے بتایا کہ سمندر کی تہہ میں جانا محض تفریح نہیں بلکہ ایک خطرناک مہم بھی ہے، خاص کر زیر آب تصویر کشی کرنا بعض اوقات بے حد خطرناک بھی ثابت ہوسکتا ہے۔

دوسری جانب تبو ک ریجن میں مقیم سعودی خواتین بھی غوطہ خوری میں کافی دلچسپی رکھتی ہیں۔ مشرقی ریجن میں 10 ہزار سے زائد پیشہ ور غوطہ خور ہیں جو عالمی سطح پر غیر معمولی شہرت کے حامل ہیں۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں