site
stats
سائنس اور ٹیکنالوجی

سورج سے دوگنا گرم سیارہ دریافت

سائنس دانوں نے ہمارے نظام شمسی سے دور ایک ایسا سیارہ دریافت کیا ہے جو سورج سے بھی دوگنازیادہ گرم ہے۔

زمین سے 650 نوری سال کے فاصلے پر واقع یہ سیارہ کیلٹ 9 سیارہ مشتری سے دگنی جسامت کا ہے جو اپنے سورج کے گرد محو گردش ہے۔

سائنس دانوں کا کہنا ہے کہ اس سیارے کی گردش اپنے سورج کے گرد اس قدر تیز ہے کہ یہ ایک چکر صرف 2 دن میں مکمل کرلیتا ہے گویا یہاں کا ایک سال ہماری زمین کے 2 دن جتنا ہے۔

اسے دریافت کرنے والے سائنس دانوں کا کہنا ہے کہ سیارے میں دن کے اوقات میں درجہ حرات 4 ہزار 300 ڈگری سینٹی گریڈ ہوسکتا ہے۔ ان کے مطابق اس کی عمر صرف 30 کروڑ سال ہے اور یہ جسامت میں ہمارے سورج سے بھی دوگنا ہے۔

ماہرین کے مطابق سیارہ اپنے ستارے سے تقریباً جڑا ہوا ہے یعنی اس کا ایک ہی رخ عام طور پر اپنے سورج کی طرف رہتا ہے۔

سیارے کی اپنی حرارت اور پھر اپنے سورج سے اس قدر قریب ہونے کے باعث سیارہ آہستہ ختم ہورہا ہے کیونکہ اس کا سورج بے تحاشہ تابکار شعاعیں خارج کر رہا ہے۔

چونکہ سیارے کی فضا میں موجود گیس تابکاری سے پھٹ پھٹ کر خلا میں گم ہوتی جا رہی ہے لہٰذا بہت جلد یہ سیارہ قصہ پارینہ بن جائے گا۔

سیارے کی موجودگی حیرت انگیز

کیلٹ 9 سیارے کو سنہ 2014 میں دریافت کیا گیا تھا۔ تاہم اس کی موجودگی اور ساخت اس قدر حیران کن تھی کہ سائنسدان اسے اپنی آنکھوں کا دھوکہ سمجھتے رہے اور مکمل تصدیق کے لیے انہیں 3 سال کا عرصہ لگا۔

سائنسدانوں نے 3 سال تک اس سیارے کے بارے میں تحقیق کی اور ان کا کہنا ہے کہ اب یہ سیارہ اپنے خاتمے کے قریب پہنچ چکا ہے۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top