The news is by your side.

فیصل آباد طالبہ تشدد کیس، شہری نے ملزم شیخ دانش کو جوتا مار دیا

فیصل آباد میں طالبہ خدیجہ پر تشدد کے کیس میں نامزد مرکزی ملزم شیخ دانش کو شہری نے جوتا مار دیا۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق فیصل آباد میں گزشتہ دنوں شادی سے انکار پر طالبہ خدیجہ کو بہیمانہ تشدد کا نشانہ بنایا گیا جس کے کیس میں پولیس نے ملزم شیخ دانش اور اہلیہ ماہم سمیت چھ ملزمان کو گرفتار کیا جبکہ بیٹی ماہم فرار ہے۔

کیس میں نامزد شیخ دانش کو پولیس نے پروٹوکول میں عدالت پیش کیا جس کے بعد ملزم کو جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کردیا گیا۔

تاہم جیسے ہی پولیس ملزم کو لے کر عدالت پہنچی تو وکلا نے اسے مارا پیٹا اور ایک شہری نے اسے جوتا مار دیا۔

پولیس شہری اور وکلا سے ملزم کو بچاتے ہوئے واپس لے گئی۔

علاوہ ازیں ایف آئی اے سائبر کرائم سرکل نے فیصل آباد میں میڈیکل کی طالبہ کو جنسی ہراساں اور تشدد کرنے کی ویڈیو وائرل کرنے کا مقدمہ شیخ دانش و دیگر کے خلاف درج کر لیا ہے۔

نمائندہ اے آر وائی نیوز کے مطابق ایف آئی اے نے متاثرہ طالبہ خدیجہ کی مدعیت میں مقدمہ درج کیا ہے جس میں مرکزی ملزم دانش کی اہلیہ ماہم اور بیٹی انا کو بھی ملزمہ نامزد کیا گیا ہے۔

فیصل آباد طالبہ تشدد کیس، شیخ دانش کیخلاف ایک اور مقدمہ درج

سائبر کرائم سرکل نے مقدمہ نمبر 125 درج کر کےسیل کر دیا ہے۔ مقدمہ میں انسداد الیکٹرانک کرائم ایکٹ اور تعزیرات پاکستان کی 7 دفعات شامل ہیں۔

جمعرات کے روز طالبہ تشدد کیس کے مرکزی ملزم شیخ دانش کو علاقہ مجسٹریٹ کے روبرو پیش کیا گیا تو پولیس نے عدالت سے ملزم کے 5 روزہ جسمانی ریمانڈ کی استدعا کی۔ عدالت نے پولیس کی استدعا منظور کرتے ہوئے ملزم دانش کا 5روزہ جسمانی ریمانڈ منظور کر لیا۔

خیال رہے کہ دو روز قبل فیصل آباد میں طالبہ کے ساتھ انسانیت سوز سلوک کی ویڈیو سامنے آئی تھی، جس میں دیکھا گیا کہ کاروباری شخصیت شیخ دانش علی اور متاثرہ طالبہ کی ہم جماعت ماہم کی جانب سے خدیجہ پر بہیمانہ تشدد کیا جارہا ہے۔

پولیس حکام کا کہنا ہے کہ ملزمان پر طالبہ پر بہیمانہ تشدد کیا اور بال بھی کاٹ دیے، جبکہ اسے جنسی طور پر بھی ہراساں کیا گیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں