The news is by your side.

Advertisement

سندھ ہائی کورٹ: اے آر وائی کے خلاف منفی مواد کی اشاعت روکنے کا حکم امتناع برقرار

کراچی: عدالت عالیہ نے اے آر وائی کےخلاف منفی مواد کی اشاعت روکنے کا حکم امتناع برقرار رکھتے ہوئے جیو اور دیگر فریقین کو فوری جواب جمع کرانے کی ہدایت کی ہے۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق جنگ،جیو کےمیر شکیل اور میر ابراہیم کیخلاف توہین عدالت کیس کی سماعت ہوئی، سندھ ہائیکورٹ میں توہین عدالت کی درخواست اے آر وائی کی جانب سےدائر کی گئی۔

وکیل اے آر وائی بیرسٹر ایان میمن نے عدالت عالیہ کو آگاہ کیا کہ جنگ، جیو عدالتی حکم امتناع کےباوجود اےآر وائی کیخلاف بےبنیاد خبریں چلارہاہے، جیو اور جنگ کےاخبارات میں مسلسل مواد شائع کیا جا رہا ہے، عدالتی کارروائی کی آڑ میں بھی اے آر وائی کی ساکھ کو نقصان پہنچایا جارہا ہے۔وکیل بیرسٹر ایان میمن نے عدالت کو بتایا کہ لاہور ہائیکورٹ میں جیو کی ایک درخواست واپس لینے پر ڈسمس ہوئی جبکہ جیو کی ایک درخواست واپس لینے پرڈسمس ہوئی، سب مقدمےبازی کا مقصد کنفیوژن پھیلانا ہے، اس طرح کے ہتھکنڈے استعمال کرنے کا مقصد اے آر وائی کے اشتہارات، ریونیو پراثر انداز ہونا ہے۔

اس موقع پر عدالت نے استفسار کیا کہ کیا جیو نے ابھی تک جواب داخل کرایا ہے؟ جواب میں اے آر وائی کے وکیل نےعدالت کو آگاہ کیا کہ توہین عدالت کیس میں جیونے بھی ابھی تک جواب داخل نہیں کیا اور ٹرانسپرنسی انٹرنیشنل کی جانب سے بھی کوئی پیش نہیں ہوا۔

جس پر عدالت نے اے آر وائی کےخلاف منفی مواد کی اشاعت روکنے کا حکم امتناع برقرار رکھتے ہوئے جیو اور دیگر فریقین کو جواب جمع کرانے کی ہدایت کی اور سماعت 24 فروری تک ملتوی کردی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں