امریکہ، مساجد کو دھمکی آمیز خطوط کا سلسلہ جاری -
The news is by your side.

Advertisement

امریکہ، مساجد کو دھمکی آمیز خطوط کا سلسلہ جاری

کیلیفورنیا : کونسل برائے امریکن اسلامک ریلیشنز کا کہنا ہے کہ لاس اینجلس کی تین مساجد کو دھمکی آمیز خط موصول ہوئے ہیں تنظیم نے مساجد کے باہر پولیس کی نفری بڑھانے کا مطالبہ کیا۔

بین الاقوامی خبر رساں ایجینسی کے مطابق کونسل برائے امریکن ریلیشنز نے لاس اینجلس کی تین مساجد کو لکھے گئے دھمکی آمیز خطوط ملنے پر انتظامیہ سے سیکیورٹی کا مطالبہ کردیا ہے۔

letter-post

یہ خطوط گزشتہ ہفتے اسلامک سینٹر آف لانگ بیچ، اسلامک سینٹر آف کلیرمونٹ اور ایور گرین اسلامک سینٹر سینٹ جوز میں بھیجے گئے۔

مساجد کو موصول دھمکی آمیز خطوط ہاتھ سے تحریر کیے گئے ہیں جن میں نو منتخب امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی تعریف کی گئی ہے اور مسلمانوں کی نسل کشی کی دھمکی دی گئی ہے۔

 اسی سے متعلق : ڈونلڈ ٹرمپ کے صدر منتخب ہونے کے بعد نفرت انگیز واقعات میں زبردست اضافہ

کونسل نے بتایا ہے کہ خط میں ڈونلڈ ٹرمپ کو نیا پولیس والا ظاہر کیا گیا ہے جو امریکا کو مسلمانوں سے صاف کردے گا اور مسلمانوں کے ساتھ وہی سلوک کرے گا جو ہٹلر نے یہودیوں کے ساتھ کیا تھا۔

سین جوز پولیس ڈپارٹمنٹ کے ترجمان سارجنٹ اینرک گارشیا نے کہا کہ پولیس نے تحقیقات شروع کردی ہیں اور اس معاملے کو نفرت پر مبنی عمل قرار دیا گیا ہے۔

ترجمان نے مزید کہا کہ امریکہ مذہبی رواداری پر یقین رکھتا ہے جہاں ہر شہری کو اپنے اپنے عقائد کے مطابق مذہبی رسومات ادا کرنے کی مکمل آزادی حاصل ہے۔

واضح رہے کہ نومنتخب امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اپنے نفرت آمیز اور متنازعہ بیانات کے باعث شہرت رکھتے ہیں جن کے امریکی صدر کا عہدہ سنبھالتے ہی اقلیتیوں بالخصوص مسلمانوں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں