The news is by your side.

Advertisement

سکے ڈھالنے کی قدیم ورکشاپ دریافت

بیجنگ: چین کے وسطی صوبے ہینان میں دنیا کی سکے ڈھالنے کی سب سے قدیم ورکشاپ دریافت ہوئی ہے۔

میڈیا رپورٹ کے مطابق چینی ماہرین آثار قدیمہ نے تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ ریڈیو کاربن ڈیٹنگ کا استعمال کرتے ہوئے ہینان کے صوبائی دارالحکومت ژینگ ژوکے مغربی حصے شنگ یانگ سٹی میں گوآنزہوآنگ کے کھنڈرات میں کانسی کو ڈھال کر برتن بنانے والی ورکشاپ کو دریافت کیا گیا ہے۔

رپورٹ کے مطابق یہ ورکشاپ پانچ سو پچاس قبل مسیح سے چھ سو چالیس قبل مسیح میں دھات کے معیاری سکے بنانے کے لئے بنائی گئی تھی، تحقیقات سے پتہ چلا کہ یہ دنیا میں سکے بنانے والی ابتک کی معلوم قدیم ترین ورکشاپ ہے۔

یہ بھی پڑھیں: تین یتیم بچھڑی بہنوں کو ایک “تصویر” نے نئی زندگی دے دی

چینی ماہرین آثار قدیمہ کے مطابق مزید کھدائی کے دوران سکوں کی تیاری سے متعلق چاراقسام کے آثار دریافت ہوئے، جن میں تیار شدہ سکے، استعمال شدہ اور غیر استعمال شدہ سکوں کے سانچوں کے ساتھ ساتھ بیرونی سانچے بھی شامل ہیں۔

کھدائی کے دوران ماہرین آثارقدیمہ نے کئی گڑھے بھی دریافت کئے جہاں بڑی مقدارمیں کانسی کے برتن بنانے کے دوران بچ جانے والے فضلے کو دبایا گیا تھا ایک گڑھے سے دو تیارشدہ دھات کے سکے بھی برآمد ہوئے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں