The news is by your side.

Advertisement

عثمان بزدار کی پالیسیوں سے نالاں، ایک اور گروپ منظر عام پر

لاہور: وفاقی حکومت اپوزیشن کی جانب سے تحریک عدم اعتماد سے نمٹنے کے لئے مصروف عمل ہے، ایسے میں پنجاب حکومت کے خلاف ان کے ہی اراکین اسمبلی نے علم بغاوت بلند کردیا ہے۔

ذرائع کے مطابق وزیراعلیٰ عثمان بزدار کی پالیسیوں سے ناخوش پی ٹی آئی کے کئی اراکین اسمبلی اچانک متحرک ہوگئے اور انہوں نے بزدار حکومت کے خلاف فیصلہ کن کردار ادا کرنے کے لئے مشاورت شروع کردی ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ عثمان بزدار کی پالیسیوں سے نالان اراکین اسمبلی کی تعداد دو درجن کے قریب ہے، جن کی جلد ہی جہانگیر ترین گروپ سے اہم ملاقات کا امکان ہے۔

ہم خیال رہنماؤں کی رائے ہے کہ عثمان بزدار مسائل حل نہیں کررہے، اب ہمیں ہی کچھ کرنا ہوگا، ناراض اراکین کا کہنا ہے کہ اگر مسائل پر توجہ نہ دی تو نوبت عدم اعتماد تک جاسکتی ہے۔

یہ بھی پڑھیں: حکومت کی اہم شخصیت کا جہانگیر ترین سے رابطہ

ادھر اپوزیشن جماعتوں کی جانب سے تحریک عدم اعتماد کے معاملے پر جہانگیر ترین مرکز نگاہ بنے ہوئے ہیں گوکہ وہ ان دنوں علاج کی غرض سے لندن میں موجود ہیں۔

ذرائع کا دعویٰ ہے کہ آئندہ چند روز بھی جہانگیر ترین کی وطن واپسی کا امکان ہے، لندن سے واپسی پر جہانگیر ترین گروپ کا مشاورتی طلب کیا جائے گا، جس میں تحریکِ عدم اعتماد کے حوالے سے حتمی فیصلہ کیا جائے گا۔

جہانگیر ترین گروپ کے اندرونی ذرائع کے مطابق ترین گروپ میں شامل اکثریت ارکان اسمبلی کا جھکاؤ اپوزیشن جماعتوں کی جانب ہے تاہم فیصلے کا حتمی اختیار جہانگیر ترین کو دیا گیا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں