پاکستان پر بھی سائبر حملوں کا خطرہ -
The news is by your side.

Advertisement

پاکستان پر بھی سائبر حملوں کا خطرہ

اسلام آباد: دنیا بھر میں سائبر حملوں کے بعد پاکستان پر بھی ان کا خطرہ منڈلانے لگا۔ ہیکرز نے پیچیدہ طریقہ اختیار کر کے حملے سے بچاؤ ناممکن بنا دیا۔ وفاقی و صوبائی حکومتیں کوئی ٹھوس پیش رفت نہ کرسکیں۔

دنیا بھر میں تاوان کے لیے کیے جانے والے سائبر حملوں کا دوسرا مرحلہ شروع ہوگیا۔ کئی ممالک ہیکرز کے حملوں کی زد میں آگئے جس کے بعد پاکستان کو بھی سائبر حملوں کے خطرات کا سامنا ہے۔

آئی ٹی ماہرین کے مطابق اس بار ہیکرز نے پیچیدہ طریقہ اختیار کر کے حملےروکنا نا ممکن بنا دیا ہے۔ عید کی تعطیلات کے باعث پاکستان اور مشرق وسطیٰ حملوں سے بچ گئے۔

اس ضمن میں وفاقی یا صوبائی سطح پر سائبر حملوں سے بچاؤ کے لیے ابھی تک کوئی ٹھوس پیش رفت نہیں کی گئی۔

مزید پڑھیں: سائبر حملے سے بچنے کے لیے احتیاطی تدابیر

آئی ٹی ماہرین کے مطابق کمپیوٹر آپریٹنگ سسٹم آن ہوتے ہی وائرس کی زد میں آجاتے ہیں۔

دوسری جانب مختلف ممالک میں کیے جانے والے سائبر حملوں میں ہیکرز نے اس بار تاوان کی رقم پر سودے بازی کا آغاز ہی 300 ڈالر سے کیا۔

اس سے قبل مئی میں بھی ڈیڑھ سو ممالک میں 3 لاکھ سے زائد کمپیوٹرز پر وانا کرائے نامی وائرس سے سائبر حملے کیے گئے تھے جن میں ہیکرز نے تاوان کا مطالبہ کرتے ہوئے 100 ڈالرز سے اس کا آغاز کیا تھا۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں