The news is by your side.

Advertisement

بھارت، 8 سالہ لڑکی کو 11 سالہ طالب علم نے زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا

منئی دہلی: بھارت میں 8 سالہ لڑکی کو 11 سالہ طالب علم اور اس کے دو بڑے بھائیوں نے اسکول کے باتھ روم میں زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا۔

بھارتی میڈیا کے مطابق بھارتی دارالحکومت نئی دہلی کے باغ پت کی رامالا گاؤں کے اسکول میں 8 سالہ لڑکی گینگ ریپ کا شکار ہوگئی، 11 سالہ لڑکے اور اس کے بھائیوں نے کمسن لڑکی کو زیادتی کا نشانہ بنایا۔

طالبہ کے والد کا کہنا ہے کہ پولیس میں شکایت درج کرانے گئے تو ملزمان کو گرفتار کرنے کے بجائے صلح کے لیے دباؤ ڈالا جارہا ہے۔

باغ پت کے ایس پی پرتاپ گوپندرا کا کہنا ہے کہ طالب علم اور اس کے بھائی زیادتی میں ملوث ہیں یا نہیں اس کا پتا انویسٹی گیشن کے بعد ہوگا۔

گلف نیوز کے مطابق علاقے کے ایس ایچ او کی جانب سے متاثرہ فیملی کو دباؤ میں لے کر کیس کو واپس لینے کے لیے دباؤ ڈالا جارہا تھا بعدازاں ایس پی پرتاپ نے ایس ایچ او کا تبادلہ کردیا۔

مزید پڑھیں: بھارت، سالگرہ پارٹی میں گینگ ریپ کا نشانہ بننے والی لڑکی دم توڑ گئی

پرتاپ گوپندرا کے مطابق لڑکی کا میڈیکل کروایا ہے رپورٹ آنے کے بعد ہی لڑکی کے ساتھ زیادتی ہونے یا نہ ہونے کا علم ہوسکے گا۔

رپورٹ کے مطابق لڑکی کے طبیعت میں بہتری آنے کے بعد عدالت میں اپنا بیان ریکارڈ کرادیا ہے، کیس کی مزید تحقیقات جاری ہیں۔

متاثرہ لڑکی کے انکل کا کہنا ہے کہ جب واقعہ کا علم ہوا تو پولیس اسٹیشن کے ایس ایچ او اور علاقے کے بزرگ افراد کی جانب سے خاموش رہنے کا کہا گیا جبکہ اسکول ٹیچر بھی واقعے سے لاعلمی کا اظہار کررہے ہیں۔

ایک رپورٹ کے مطابق بھارت میں زیادتی کے واقعات میں بے تحاشہ اضافے کے بعد دنیا میں بھارت کو لڑکیوں کے حوالے سے بدترین ملک قرار دیا گیا ہے۔

یاد رہے کہ بھارت میں سال 2016 کے دوران 30000 ہزار ریپ کے کیس رپورٹ ہوئے تھے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں