The news is by your side.

Advertisement

نواز شریف کن امراض میں مبتلا ہیں، ڈاکٹر ڈیوڈ کی رپورٹ سامنے آ گئی

اسلام آباد: عدالت میں جمع کرائی گئی میاں نواز شریف کی میڈیکل رپورٹ اے آر وائی نیوز نے حاصل کر لی، نواز شریف نے وکیل کے ذریعے اسلام آباد ہائی کورٹ میں طبی بنیاد پر حاضری سے استثنیٰ مانگ لیا۔

تفصیلات کے مطابق نواز شریف نے طبی بنیاد پر حاضری سے استثنیٰ مانگ لیا، وکیل خواجہ حارث کے ذریعے اسلام آباد ہائی کورٹ میں درخواست دائر کر دی، انھوں نے درخواست میں مؤقف اختیار کیا ہے کہ میں بیماری کے باعث عدالت میں پیش ہونے سے قاصر ہوں۔ درخواست کے ساتھ نواز شریف کی 4 ستمبر کی میڈیکل رپورٹ بھی منسلک کی گئی ہے۔

یہ میڈیکل رپورٹ نواز شریف کے معالج ڈاکٹر ڈیوڈ آر لارنس نے جاری کی ہے، جس میں کہا گیا ہے کہ نواز شریف ہائپر ٹینشن، امراض قلب سمیت دیگر بیماریوں میں مبتلا ہیں، وہ ایڈوانس کورونری آرٹری مرض کا شکار ہیں، میڈیکل تھراپی کے باوجود نواز شریف کلاس ٹو انجائنا لاحق ہے۔

رپورٹ میں تجویز دی گئی ہے کہ مریض کی کورونری انجیوگرافی کرائی جائے، جب کہ انجیو گرافی سے متعلق باقی رپورٹس ابھی آنی ہیں، نیز نواز شریف کو ریڈو کرونری آرٹری بائی پاس گرافٹنگ کی ضرورت ہو سکتی ہے، نواز شریف کو انجیو گرافی تک دوائیں جاری رکھنی ہوں گی۔

توشہ خانہ ریفرنس، نواز شریف اشتہاری قرار ، یوسف رضاگیلانی اورآصف زرداری پرفردِجرم عائد

جسمانی سرگرمی کے لیے میڈیکل رپورٹ میں ڈاکٹر نے تجویز دی ہے کہ نواز شریف روز کھلی فضا میں واک کریں، ڈاکٹر ڈیوڈ کی تجویز سے نواز شریف کے لندن میں ذاتی معالج بھی متفق ہیں۔

ڈاکٹر ڈیوڈ نے نواز شریف کو انجیو گرافی تک لندن میں رہنے کا مشورہ بھی دیا ہے، رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ نواز شریف کرونا وبا کے دوران کوئی سفر نہ کریں، کرونا میں مبتلا ہوئے تو جان کو خطرہ ہو سکتا ہے۔

میڈیکل رپورٹ میں ذہنی مسائل کا بھی ذکر کیا گیا ہے، رپورٹ کے مطابق حالیہ چیک اپ سے اندازہ لگایا گیا ہے کہ نواز شریف شدید ذہنی دباؤ کا شکار ہیں، پاکستان جانے اور قید تنہائی سے ذہنی دباؤ بڑھ سکتا ہے، اپنے ساتھی کی جدائی اور قید تنہائی دل کی بیماری کو بڑھا سکتی ہے، خدشہ ہے ذہنی دباؤ سے نواز شریف ایک اور دل کی بیماری کا شکار ہو جائیں۔

اس میڈیکل سرٹیفکیٹ میں نواز شریف کو دی جانے والی ادویات کا بھی ذکر ہے۔

واضح رہے کہ آج احتساب عدالت نے توشہ خانہ ریفرنس میں نواز شریف کو اشتہاری قرار دے دیا ہے، دائمی وارنٹ گرفتاری بھی جاری کر دیا گیا، 7 روز میں نواز شریف کی منقولہ اور غیر منقولہ جائیداد کی تفصیل طلب کی گئی، احتساب عدالت کے جج نے کہا نواز شریف کو اشتہاری قرار دے کر کیس الگ کر رہے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں