The news is by your side.

Advertisement

موٹاپے سے 11 اقسام کے کینسر کا خطرہ

نیویارک: ماہرین کا کہنا ہے کہ موٹاپے کا شکار افراد چھاتی کے سرطان سمیت 11 مختلف اقسام کے کینسر کا شکار ہوسکتے ہیں۔

کینسر دنیا بھر میں اموات کی بڑی وجہ ہے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ گو کہ کینسر کی بے شمار وجوہات ہوسکتی ہیں، تاہم ان کا سرطان سے تعلق بہت زیادہ گہرا نہیں ہے۔ مخصوص حالات میں یہ وجوہات کینسر کو جنم دے سکتی ہیں۔

البتہ حال ہی میں کی جانے والی تحقیقوں سے ثابت ہوا ہے کہ موٹاپے کا سرطان سے واضح تعلق ہے۔ تحقیقی رپورٹس میں واضح طور پر بتایا گیا کہ موٹاپا لازمی طور پر ان 11 اقسام کے کینسرز کی وجہ بن سکتا ہے۔

مزید پڑھیں:

مرچیں کھانے سے موٹاپا کم کرنے میں مدد ملتی ہے

سورج کی کرنیں موٹاپا کم کرنے میں مددگار

کینسرز کی ان اقسام میں چھاتی، گردے، لبلبلے، بڑی آنت، ریکٹم (بڑی آنت کا ایک حصہ) اور بچہ دانی یا بیضے کا سرطان شامل ہے۔

عالمی ادارہ صحت کا کہنا ہے کہ گزشتہ نسل کے مقابلے میں نئی نسل میں موٹاپے کا رجحان دگنا ہوچکا ہے۔ دنیا بھر میں ایک ارب سے زائد افراد موٹاپے کا شکار ہیں۔

یاد رہے کہ اس سے قبل کی جانے والی طبی تحقیقوں کے مطابق موٹاپا امراض قلب، ذیابیطس، گردوں کے مسائل اور جوڑوں میں تکالیف کا سبب بنتا ہے۔ یہی نہیں حد سے زیادہ موٹاپا دماغی کارکردگی کو بھی متاثر کرتا ہے اور دماغ کی فعالیت اور استعداد کم ہونے لگتی ہے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں