The news is by your side.

Advertisement

پریانکا اور نک جونس، شادی کے 117 روز بعد طلاق کی خبریں زیر گردش

ممبئی: بالی ووڈ اداکارہ پریانکا چوپڑا اور نک جونس کے درمیان تنازعات اور علیحدگی کی افواہیں زیر گردش ہیں۔

تفصیلات کے مطابق پریانکا چوپڑا اور نک جونس نے گزشتہ برس شادی کی جس کے بعد دونوں پر امریکی میڈیا اور ناقدین نے تنقید بھی کی تھی، ازدواجی بندھن میں بندھنے کے چند روز بعد ہی امریکی میگزین نے بے بنیاد خبر شائع کی تھی جس پر ادارے کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا گیا تھا۔

شادی کے بعد بالی ووڈ اداکارہ اپنا بیشتر وقت نک جونس کے امریکا میں گزار رہی ہیں، دونوں سوشل میڈیا پر کافی سرگرم بھی رہتے ہیں اور اکثر اوقات تصاویر بھی شیئر کرتے ہیں۔

مزید پڑھیں: پریانکا چوپڑا نے شادی کے بعد پہلی بار اعتراف کرلیا

امریکا کے ہفتہ وار میگزین نے دعویٰ کیا ہے کہ پریانکا اور نک جونس کی راہیں ہمیشہ کے لیے جدا ہونے والی ہیں۔ رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ امریکی گلوکار ہے اہل خانہ اپنی بہو سے بالکل خوش نہیں اس لیے انہوں نے نک کو طلاق دینے کا مشورہ دیا۔

رپورٹ میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ دونوں کے درمیان معمولی تنازعات چل رہے تھے البتہ اب مسائل کافی بڑھ چکے جس کی وجہ سے انہوں نے ایک دوسرے سے ہمیشہ کے لیے علیحدہ ہونے کا فیصلہ کیا۔

رپورٹ میں بتایا گیا کہ شادی کے محض 117 روز بعد ہی دونوں نے ایک دوسرے کو برداشت کرنا چھوڑ دیا کیونکہ پریانکا گھریلو معاملات میں اپنی حکمرانی چاہتی ہیں جبکہ نک جونس اور اُن کے اہل خانہ فیصلہ سازی کا اختیار انہیں دینا نہیں چاہتے۔

یہ بھی پڑھیں: پریانکا کے کتے کی جیکٹ کی قیمت، تنخواہ دار ملازم کی ماہانہ آمدنی سے زیادہ

امریکی میگزین نے یہ بھی دعویٰ کیا کہ دونوں کو اب احساس ہوا کہ انہوں نے شادی کا فیصلہ جلد بازی میں کیا البتہ نک کو اس بات کا احساس بھی ہوا کہ پریانکا ٹھنڈے مزاج کی نہیں بلکہ وہ اپنی بات منوانے کے لیے غصے میں آپے سے ہی باہر ہوجاتی ہیں۔

نک جونس کا خاندان جوناس اس بات کا خواہش مند ہے کہ دونوں کے درمیان جو بھی معاملات ہوں اُس پر تنازعات کھڑے نہ ہوں۔

دوسری جانب پریانکا اور نک جونس نے علیحدگی کی خبروں کو بے بنیاد قرار دیتے ہوئے امریکی میگزین کے خلاف چارہ جوئی کا فیصلہ کیا ہے۔ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے نک کا کہنا تھا کہ ’چند لوگ آپ کو کبھی خوش نہیں دیکھ سکتے، پریانکا کا ایسا کوئی راز یا بات نہیں جس کے بارے میں فضول باتیں بنائی جارہی ہیں‘۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں