site
stats
سائنس اور ٹیکنالوجی

یورپ سے امریکا ایک بار پھر سائبرحملوں کی زد میں

لندن : یورپ سے امریکا تک ایک نئے کمپیوٹر وائرس نے متعدد کمپنیوں کے ڈیٹا میں خلل پیدا کرکے کھلبلی مچادی ہے۔

گولڈن آئی نامی وائرس نے دنیا بھر کی اسی سے زائد کمپنیوں کے نظام میں خلل ڈال کر یورپ سے امریکہ تک متعدد معروف کمپنیوں کے ڈیٹا پروسینگ سٹم کو جام کردیا، جس نے کمپنیوں کے کام کو بری طرح متاثر کیا ہے۔

خطرناک کمپیوٹر وائرس کی وجہ سے بھارت میں ممبئی اور امریکہ میں لاس اینجلس سمیت 76 بندرگاہوں پر کام شدید متاثر ہوا ہے جبکہ آسٹریلیا میں ایک چاکلیٹ فیکٹر ی کی پیداوار متاثرہوئی۔

اس سائبر حملے سے سب سے زیادہ یوکرائن متاثر ہوا ہے، جہاں توانائی کی تقسیم کے سرکاری اداروں اور بینک کے کمپیوٹر نظام سمیت کئی کمپنیاں اس وائرس کے حملے کا نشانہ بنی ہیں۔


مزید پڑھیں : دنیا بھر میں ہیکرز ایک بار پھر متحرک


یہ خطرناک وائرس یوکرین سے بدھ کو جاری ہوا، جو تیز رفتاری سے دنیا میں تباہی مچا چکا ہے۔

آئی ٹی ماہرین نے گولڈن آئی نامی وائرس سے متعلق عالمی وارننگ بھی جاری کر دی ہے اور اس کے تدارک کیلئے بھی اقدامات اٹھائے جا رہے ہیں۔

یاد رہے کہ گذشتہ ماہ بھی ڈیڑھ سو ممالک میں 3 لاکھ سے زائد کمپیوٹرز پر وانا کرائے نامی وائرس سے سائبر حملے کیے گئے جن میں ہیکرز نے تاوان کا مطالبہ کیا تھا۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top