The news is by your side.

Advertisement

راولپنڈی: گستاخانہ مواد کی تشہیر پر خاتون کو سزائے موت

راولپنڈی: ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج کی عدالت نے سوشل میڈیا پر گستاخانہ مواد کی تشہیر کا جرم ثابت ہونے پر فیصلہ سنا دیا، مجرمہ کو سزائے موت کے ساتھ 20 سال قید اور ایک لاکھ 50 ہزار روپے جرمانے کی سزا کا حکم سنا دیا گیا ہے.

راولپنڈی ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج عدنان مشتاق کی عدالت نے مجرمہ عنیقہ عتیق کو توہین رسالت کے مقدمہ میں سزائے موت جبکہ مجرمہ کو سائبر کرائم ایکٹ کے تحت اور دیگر دفعات کے تحت مجموعی طور پر بیس سال سزا سنائی.

سزا کے ساتھ مجرمہ کو ڈیڑھ لاکھ جرمانہ ادا کرنے کا حکم دیا ہے.

مجرمہ عنیقہ اتیق پر سوشل میڈیا پر توہین رسالت پر مبنی گستاخانہ مواد کی تشہیر کا الزام تھا۔مجرمہ کے خلاف مقدمہ ایف آئی اے سائبر کرائم ونگ راولپنڈی میں 2020 میں حسنات فاروق کی مدعیت میں درج کیا گیا تھا۔

مقدمہ میں توہین رسالت، توہین مذہب اور انسداد سائبر کرائم ایکٹ کی دفعات شامل تھی.

Comments

یہ بھی پڑھیں