site
stats
لائف اسٹائل

آپ کے بہن بھائی آپ کی زندگی پر کیا اثرات مرتب کرتے ہیں؟

بہن بھائی کا رشتہ ایک ایسا رشتہ ہے جو ساری عمر قائم رہتا ہے۔ لیکن کیا آپ جانتے ہیں کہ آپ کے بہن بھائی آپ کی شخصیت اور آپ کی صحت پر بھی اثر انداز ہوتے ہیں۔

آئیے دیکھتے ہیں کہ بہن بھائی ایک دوسرے کی زندگی اور صحت پر کیا اثرات مرتب کرتے ہیں۔

:وزن میں کمی یا زیادتی

ماہرین کا کہنا ہے کہ آپ کھانے پینے کے معاملے میں اپنے بڑے بہن یا بھائی کو اپنا آئیڈیل مانتے ہیں۔ اگر وہ زیادہ کھاتے ہوں گے اور نتیجے میں موٹاپے کا شکار ہوں گے، تو قوی امکان ہے کہ آپ بھی ان کی تقلید میں زیادہ کھانے کو اپنا معمول بنا لیں۔

:کردار کی تعمیر

کہا جاتا ہے کہ بچوں کا نمبر ان کے کردار اور ان کی شخصیت کا عکاس ہوتا ہے۔ مثلاً سب سے پہلا بچہ قدرتی طور پر لیڈر ہوتا ہے اور اس میں رہنمائی کرنے والی خصوصیات ہوتی ہیں۔

اسی طرح دو بہن بھائی کے درمیان ہونے والے بچے کی کوئی خاص شخصیت نہیں ہوتی اور وہ عموماً زندگی میں کوئی قابل ذکر کام انجام نہیں دے پاتا۔ لیکن سائنس اس کی تصدیق نہیں کرتی۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ دو بہن بھائی آپس میں کتنے ہی اچھے دوست کیوں نہ ہوں، وہ ہمیشہ اپنی منفرد اور ایک دوسرے سے الگ شناخت بنانا چاہتے ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ وہ مختلف شعبوں کا انتخاب کرتے ہیں اور بہت کم ایسا ہوتا ہے کہ دو بہن بھائی کسی ایک ہی شعبہ میں اپنا کیریئر بنائیں۔

:پہلا استاد

بڑے بہن یا بھائی زندگی کے ہر شعبہ میں آپ کے پہلے استاد ثابت ہوتے ہیں۔ اسکول کے آغاز سے لے کر، کیریئر، نوکری، شادی غرض ہر پہلو میں یہ اپنے تجربوں سے آپ کو مستفید کریں گے۔

:شادی بچانے میں معاون

امریکا میں کیے جانے والے مختلف سروے کے مطابق جو لوگ بڑے خاندان یعنی زیادہ افراد والے خاندانوں کا حصہ ہوتے ہیں ان کے ازدواجی رشتوں میں پیچیدگیاں کم ہوتی ہیں اور ان کے درمیان طلاق کی شرح بہت کم ہوتی ہے۔

:ڈپریشن کا خطرہ

ماہرین کا ماننا ہے کہ ایک گھر میں رہنے والے بہن بھائیوں کے درمیان کئی باتوں پر اختلافات ہوسکتے ہیں جو لڑائی جھگڑوں کا سبب بنتے ہیں۔ یہ جھگڑے آگے چل کر ذہنی دباؤ اور ڈپریشن کا سبب بھی بن سکتے ہیں۔

:خوشیوں کا سبب

عمرانیات کے ماہرین کا کہنا ہے کہ بہن بھائی آپ کی خوشیوں میں اضافے کا سبب بھی بن سکتے ہیں۔ بہن بھائیوں سے اچھے تعلقات، خلوص، ہمدردی اور مشکل کے وقت ایک دوسرے کے کام آنے کی خصوصیات خاندان کی خوشیوں کو دوبالا کرتی ہیں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top